لاہور: خاتون کا وارڈن پر تشدد، خود کو گاڑی میں بند کر لیا -
The news is by your side.

Advertisement

لاہور: خاتون کا وارڈن پر تشدد، خود کو گاڑی میں بند کر لیا

لاہور: گارڈن ٹاؤن کے علاقے میں پنجاب یونیورسٹی کی اسسٹنٹ پروفیسر اور ٹریفک وارڈن کے درمیان جھگڑا ہوا، خاتون نے وارڈن پر بدتمیزی اور ٹریفک پولیس نے خاتون اور ان کے خاوند پر وارڈن کو تشدد کاکا الزام عائد کیا ہے۔

ٹریفک وارڈنز کے مطابق پنجاب یونیورسٹی کی اسسٹنٹ پروفیسر کو صبح ایک وارڈن نے روک کر گاڑی کے کاغذات مانگے جس پر وہ برہم ہوکر گھر چلی گئی لیکن شام کے وقت شوہر کے ساتھ اسی چوک پر آئیں اور ڈیوٹی پر موجود دوسرے وارڈن پر تھپڑوں کی برسات کرکے غصہ اتارا۔ پھر دونوں نے خود کو گاڑی میں بند کر لیا۔

گارڈن ٹاؤن پولیس اسسٹنٹ پروفیسر، ان کے خاوند اور وارڈنز کو تھانے لے گئی، جہاں خاتون پروفیسر ڈیڑھ گھنٹے تک گاڑی سے باہر ہی نہ نکلیں اور نیم بیہوش ہو گئیں، مدد کیلئے آنے والے خاتون کے بھائی عمر ایڈووکیٹ کا کہنا تھا کہ ان کی بہن سے بدتمیزی ہوئی، وارڈنز الٹا انہیں ملزم بنارہے ہیں۔

ٹریفک انسپکٹر نرگس اپنے وارڈن کی مدد کیلئے تھانے پہنچیں اور خاتون پروفیسر کے خلاف درخواست دی لیکن کوئی شنوائی نہ ہوئی۔ ساٹ لاہور پولیس کے ایس ایچ او نے معاملے پر مٹی پاو کی حکمت عملی اپنائی اور ٹریفک وارڈنز کو جل دے کر خاتون پروفیسر کو موقع سے نکال دیا، وارڈنز کے شہریوں سے ناروا سلوک معمول بنتا جارہا ہے، اعلیٰ حکام نے توجہ نہ دی تو عوام کا اعتماد پڑھی لکھی ٹریفک پولیس سے اٹھ جائے گا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں