محرم الحرام: ملک بھر میں سیکیورٹی ہائی الرٹ، حساس علاقوں کیلئے فوج اسٹینڈ بائی پر -
The news is by your side.

Advertisement

محرم الحرام: ملک بھر میں سیکیورٹی ہائی الرٹ، حساس علاقوں کیلئے فوج اسٹینڈ بائی پر

کراچی: کراچی سمیت ملک بھر میں آٹھ، نو اور دس محرم الحرام کے لئے سیکیورٹی انتہائی سخت ک ردی گئی، سیکیورٹی کے پیش نظر بیشتر شہروں میں فون سروس بند رہے گی۔ کراچی سمیت ملک بھر میں حساس علاقوں کے لئے فوج کو اسٹینڈ بائی کردیا گیا۔  کراچی میں مرکزی جلوسوں کی سیکیورٹی پر20ہزاراہلکارتعینات ہونگے۔

کراچی میں آٹھ محرالحرام کے جلوس نکلنا شروع ہو گئے ہے۔ کراچی میں آٹھ تادس محرم کے جلوسوں کی سیکیورٹی کے لئے پولیس اور رینجرز کے بیس ہزار اہلکار تعینات ہوں گے۔ بارہ سو پچاس سے زائد سی سی ٹی وی کیمرےجلوس کی مانیٹرنگ کریں گے۔ سندھ پولیس کی جانب سے سیکیورٹی پلان جاری کردیا ہے۔

کراچی پولیس کی جانب سے جاری سیکیورٹی پلان کے مطابق مرکزی جلوس کے راستوں میں آنیوالی بلند عمارتوں پر دور بینوں سے لیس سو سے زائد شارپ شوٹرز تعینات کئے جائیں گے۔ کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کیلئے پولیس اور رینجرز کے پانچ سو کمانڈوزپر مشتمل کوئک رسپانس فورس بھی ہمہ وقت تیاررہےگی۔

شہر بھر میں آٹھ سے دس محرم موٹر سائیکل کی ڈبل سواری لائسنس یافتہ اسلحہ لیکر چلنے اور ہیلی کیم کیمرے چلانے پر بھی پابندی ہوگی۔ نو اور دس محرم کے جلوسوں کے آغاز سے قبل تمام راستوں کو سراغ رساں کتوں اور بم ڈسپوزل اسکواڈ کی ٹیموں کی مدد سے کلیئر کرایا جائے گا۔

جلوس کے اطراف سو سے زائد پولیس موبائلیں دس بکتر بند گاڑیاں اور اسی سے زائد موٹر سائیکلوں پر مشتمل قانون نافذ کرنے والے اداروں کا دستہ ہوگا۔ جلوسوں کے چار سو پولیس کی خصوصی کیمروں والی موبائلیں بھی چلیں گی جبکہ صرف اسٹیکر والی گاڑیوں کو چیکنگ کے بعدجلوس میں داخل ہونے کی اجازت ہوگی۔

دوسری جانب شہر بھر میں آٹھ محرم کا عباس علمدارکی یادمیں مجالس اورجلوسِ عزا کا سلسلہ شروع ہو گیا ہے جس کیلئے ایم اے جناح روڈ کو مکمل طور پر بند کردیا گیا ہے۔ آٹھ محرم الحرام کا دن حضرت امام حسین کے بھائی حضرت عباس علمدار سے منسوب ہے ،آج برپا ہونے والی مجالس میں میدان کربلا میں حضرت عباس علمدارکی بہادری شجاعت ، ان کے صبر اور شہادت پر روشنی ڈالی جاتی ہے۔

عزاداران حضرت عباس کی یاد میں سینہ کوبی اور زنجیر زنی بھی کررہے ہیں،ملک کے تمام چھوٹے بڑے شہروں میں صبح سویرے سے ہی ماتمی جلوس نکالے جارہے ہیں اورمجالس جاری ہیں ،آٹھ محرم کےجلوسوں کیلئے سیکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے ہیں،کراچی میں پولیس اور رینجرزکےبیس ہزاراہلکار تعینات ہیں، لاہور ، پشاور ،کوئٹہ سمیت ملک بھر میں سیکیورٹی کیلئے انتہائی مربوط پلان تشکیل دیاگیاہے،نوابشاہ میں شیعہ علما کونسل کے ضلعی جنرل سیکریٹری نے سیکیورٹی انتظامات پرعدم اطمینان کااظہار کیا ہے۔

ادھر ملک بھر میں محرم الحرام کے دوران امن وامان برقراررکھنے کے لئے بتیس ہزار سے زائد فوجی اورنیم فوجی اہلکارتعینات کئے گئے ہیں۔ محرم الحرام میں کسی بھی ناخوشگوارواقعے سے نمٹنے کے لئے وزارتِ داخلہ نے ملک بھرمیں سیکیورٹی ہائی الرٹ کردی ہے۔

وفاقی وزیرِداخلہ چوہدری نثارعلی خان کے مطابق عاشورہ سمیت آئندہ چندروزتک ملک بھرمیں سیکیورٹی سخت رکھی جائے گی۔ ملک کے چوّن شہروں میں آرمی اورنیم فوجی دستوں کے بتیس ہزارچھ سوپچانوے اہلکارتعینات کئے گئے ہیں۔۔ جلوسوں کی فضائی نگرانی کے لئے مختلف اسٹیشنوں پربارہ ہیلی کاپٹرزبھی موجودہوں گے۔

وزیرِداخلہ کے مطابق نواوردس محرم کوحساس شہروں میں موبائل فون سروس بھی بندکی جاسکتی ہے۔ محرم کی تمام سرگرمیوں اورجلوسوں کی نگرانی کے لئے وزارتِ داخلہ میں خصوصی کنٹرول روم قائم کیا گیا ہے جہاں چوبیس گھنٹے مانیٹرنگ کی جائے گی۔ وفاقی حکومت جلوسوں اورعوام کی حفاظت یقینی بنانے کے لیے صوبائی حکومتوں سے مسلسل رابطے میں رہے گی۔

کوئٹہ میں بھی محرم کے دوران ممکنہ دہشت گردی سے نمٹنے کے لئے سیکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئےہیں، شہر میں مختلف مقامات پر پولیس اور ایف سی کے سات ہزار سے زائد اہلکار تعینات کئے گئے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں