مذاکرات کے راستے بند ہوئے تو فوج کو سہولت کار کے طور پر لایا گیا،عابد شیر -
The news is by your side.

Advertisement

مذاکرات کے راستے بند ہوئے تو فوج کو سہولت کار کے طور پر لایا گیا،عابد شیر

ملتان : وزیر مملکت برائے پانی وبجلی عابد شیر علی نے کہا ہے کہ فوج پاکستان کے کان اور آنکھیں ہے،  مذاکرات کے راستے بند ہوگئے تو فوج کو سہولت کار کے طور پر لایا گیا۔

مسلم لیگی رہنما رانا محمودالحسن کے گھر پر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے عابد شیر علی نے کہا کہ مسلم لیگ ن کی حکومت آتے ہی سازشیں شروع ہوجاتی ہیں، انہوں نے کہا کہ چند ہزارلوگوں کو اسلام آباد میں بٹھا کر حکومت کے خلاف سازش کی جارہی ہے، میڈیا کو کنٹرول کرکے سازش پھیلائی جارہی ہے۔

وزیر مملکت نے کہا کہ عمران خان ہر موقع پر یوٹرن لے لیتے ہیں، صبح سے شام تک طوطا کہانی چلتی ہے۔

انہوں نے سوال کیا کہ دھرنا دینے والے پاکستان سے کیا چاہتے ہیں؟ انہوں نے فوج کو ملک کی آنکھیں اور کان قراردیتے ہوئے کہا کہ اگر فوج نے تعاون کیا تو کون سا جرم کیا؟ ہم نہیں چاہتے کہ فوج اور عوام آمنے سامنے ہوں۔

عابد شیر علی کا کہنا تھا کہ احتجاج کرنے والوں کو آزاد عدلیہ پر بھی اعتماد نہیں، ججوں کی مدت ملازمت ختم ہوجاتی ہے تو عمران خان یوٹرن لے لیتے ہیں، انہوں نے کہا کہ قبریں کھود کرخون خرابے کا پیغام دیا جارہا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں