The news is by your side.

Advertisement

مزاحیہ شاعر ضمیر جعفری کو ہم سے بچھڑے 16برس بیت گئے

کراچی: اردوادب کےمعروف شاعر،مزاح نگارسیدضمیرجعفری کی آج سولہویں برسی منائی جارہی ہے، اردوادب اورصحافت کے لئے اُن کی خدمات کوکبھی نہیں بھلایاجاسکتا۔

؎ممتازشاعراورمزاح نگارسیدضمیرجعفری اردوزبان میں طنزومزاح کےفروغ کےلئےان کی گراں قدرخدمات تاریخ کاایک روشن باب ہیں۔
صحافت ہویاشاعری ضمیر جعفری نےجس میدان میں قدم رکھا،شعبہ کو نئی جہتوں سےہمکنارکیا، وہ طنزومزاح کے پیرائے میں زندگی کی تلخ حقیقتوں اورصداقتوں نہایت دل نشین اندازمیں تصویرکشی کرتے۔

ضمیرجعفری کی علمی وادبی خدمات کے اعتراف میں صدارتی تمغہ برائے حسنِ کاکردگی، ہمایوں گولڈمیڈل اورتمغہ قائداعظم سے نوازاگیا۔ۢ

پچاس سے زائد تصانیف کےمصنف کی مشہورکتابوں میں مافی الضمیر،مسدس بدحالی،ولایتی زعفران،نشاطِ تماشا شامل ہیں، اردوکی ظریفانہ شاعری کایہ آفتاب بارہ مئی انیس سوننانوے میں غروب ہوگیا۔

اودیس سے آنے والے بتا

کس حال میں ہیں یاران وطن

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں