مقتول صحافی ارشاد مستوئی کی نمازجنازہ جکیب آباد میں ادا -
The news is by your side.

Advertisement

مقتول صحافی ارشاد مستوئی کی نمازجنازہ جکیب آباد میں ادا

جیکب آباد : سچ کے سفر میں بیباک عامل صحافی،  اے آروائی نیوز اور بلوچستان یونین آف جرنلسٹ کے سیکریٹری جنرل ارشاد مستوئی کو گزشتہ شب جبر کے سفاک قاتلوں نے جاں بحق کر ڈالا، شہید ارشاد مستوئی کی نمازجنازہ جیکب آباد میں ادا کردی گئی ۔

لہو سے صحافت کے مقدس پیشے کی آبیاری کرنے والے معاشرے کی وہ مثال بن جاتے ہیں، جن سے جدوجہد اور آگہی کے چراغ جلانے کی ایک نئی امنگ اور جذبےبیدار ہوتے ہیں، انہی جذبوں کی صداقت کو اے آروائی نیوز کوئٹہ کے اسائمنٹ انچارج اور سینئیر صحافی ارشاد مستوئی نے ثابت کیا ۔ جنہوں نے ظالم کےسامنے سر نہیں جھکایا اور سچ کے سفر میں اپنی جان کو بھی عزیز نہ جانا ۔

ارشاد مستوئی کا جسد خاکی آبائی علاقے پہنچا تو ہر آنکھ اشکبار اور ہر شخص غمگین تھا ۔ ارشاد مستوئی کے بڑے بھائی کا کہنا تھا کہ چھوٹا بھائی شہادت کا جام پی کر مجھے پیچھے چھوڑ گیا، ارشاد مستوئی جام شہادت نوش کرکے دشتِ صحافت اور اےآروائی نیوز کی تاریخ میں ایک نئے باب کا اضافہ کرگئے۔

گزشتہ روز ظلم کو ظلم لکھنے والے ارشاد مستوئی کو نامعلوم سفاک قاتلوں نے فائرنگ کرکے قتل کردیا تھا، کوئٹہ کے علاقے جناح روڈ کے قریب نامعلوم مسلح افراد نے نیوز ایجنسی کے دفترمیں گھس کر فائرنگ کردی، جس کے نتیجے میں اے آروائی نیوز کے اسائنمنٹ ایڈیٹر ارشاد مستوئی شدید زخمی ہوگئے، انھیں قریبی اسپتال لے جایا گیا جہاں ڈاکٹروں نے ان کے جاں بحق ہونے کی تصدیق کردی۔

حملے میں ان کے علاوہ مزید دو افراد اور جاں بحق ہوئے تھے، دونوں افراد کا تعلق ایک نیوز ایجنسی سے ہے، ارشاد مستوئی بلوچستان یونین آف جرنلسٹ کے جنرل سیکریٹری تھے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں