موجودہ ملکی حالات کسی صورت بھی ملک کیلئے آئیڈیل نہیں، شرجیل میمن -
The news is by your side.

Advertisement

موجودہ ملکی حالات کسی صورت بھی ملک کیلئے آئیڈیل نہیں، شرجیل میمن

کراچی : سندھ کے وزیر اطلاعات و بلدیات شرجیل انعام میمن نے کہا ہے کہ موجودہ ملکی حالات کسی صورت بھی ملک کے لئے آئیڈیل نہیں ہیں، سیاسی جماعتوں کو انا کا مسئلہ بنانے کی بجائے تمام مسائل کا حل مصالحت اور بات چیت سے حل کرنا چاہیے کیونکہ ہم اس ملک کا مستقبل جمہوریت سے وابستہ چاہتے ہیں۔

کراچی میں چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹریز کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کے موجودہ صورتحال میں کردار کو اس ملک کے عوام نے سراہا ہے کیونکہ شریک چیئرمین اور سابق صدر آصف علی زرداری نے میاں محمد نواز شریف سمیت تمام سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں کو معاملات افہام و تفہیم سے حل کرنے پر راغب کیا ہے۔

انھوں نے کہا کہ تاجر برادری کسی بھی ملک کی ترقی اور اس کا پہیہ چلانے میں اہم ستون کی حیثیت رکھتی ہے، کراچی کی تاجر برادری کو دعوت دیتا ہوں کہ وہ سندھ حکومت کو اوون کریں اور تمام وزارتوں میں اپنی کمیٹیوں کو شامل کریں، بجلی، گیس اور پانی کا بحران صوبے میں موجود ہے اور جب بھی نواز شریف کی حکومت آتی ہے وہ ہمارے حصے پر ڈاکہ ڈالتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ گذشتہ 18 سے 20 دن سے اسلام آباد میں جو تماشہ لگایا گیا ہے اور ملک کی بہتری اور نظام کو بہتر بنانے کے جو دعوے کئے جارہے ہیں اس کو کوئی بھی عقلمند انسان نہیں سراہے گا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان پیپلز پارٹی کا پہلے دن سے یہی موقف ہے کہ مسائل کو افہام و تفہیم سے بات چیت کے ذریعے حل کیا جائے اور کوئی بھی اس کو انا کا مسئلہ نہ بنائے۔

انہوں نے کہا کہ ملک کو آئین اور سسٹم کے ذریعے ہی چلایا جاسکتا ہے، ماروائے آئین کوئی بھی اقدام ملک کے مفاد میں نہیں ہے، انہوں نے کہا کہ اس ملک کو میرے عظیم قائد ذوالفقار علی بھٹو نے پہلی بار ایسا آئین دیا جو آج بھی اس ملک میں رائج ہے، انہوں نے کہا کہ اس ملک کو سیاستدانوں نے ہی بنایا تھا اور اس کو سیاستدان ہی چلائیں گے۔

اس موقع پر انہوں نے مسلم لیگ (ن) کی لیڈرشپ پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ انہیں اپنی گردن سے سریا نکال کر جمہوری انداز میں اس ملک کو چلانا ہوگا، انا اور ضد سے معاملات سلجھنے کی بجائے مزید الجھ سکتے ہیں۔ اسی طرح اب دھرنے دینے والوں کو بھی مزید ڈرامہ کرنے اور انا کی بجائے بات چیت کے ذریعے اس مسئلے کا آئینی حل نکالنا ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ بزنس کمیونیٹی اس ملک کا پہیہ چلا رہی ہے اور کراچی سے ملک کو جانے والے 70 فیصد رونیو میں کراچی کی تاجر برادری کا ہاتھ ہے۔ انہوں نے کہا کہ سندھ حکومت اور پاکستان پیپلز پارٹی بزنس کمیونٹی کی حیثیت کو سمجھتے ہیں اور ہم یہ بھی اچھی طرح جانتے ہیں کہ تاجر برادری کے خدشات کو دور کرکے اور ان کو سہولتیں فراہم کرکے ہی ہم اس صوبے اور ملک کو ترقی کی رہ پر گامزن کرسکتے ہیں۔

شرجیل میمن نے کہا کہ شہر میں مسائل سے انکار نہیں ہے اور اس سلسلے میں صوبائی حکومت اور محکمہ بلدیات اپنی تمام تر وسائل کو بروئے کار لانے میں مصروف ہے۔

اس موقع پر کے سی سی آئی کے صدر عبداللہ ذکی، سندھ بورڈ آف انویسٹمنٹ کے سابق چیئرمین زبیر موتی والا، یونس بشیر، ادریس میمن اور دیگر مقررین نے بھی شرجیل انعام میمن کی کاوشوں پر انہیں خراج تحسین پیش کیا۔ ان مقررین نے صنعتکاروں کو پانی، بجلی، امن و امان اور گیس کے حوالے سے درپیش مشکلات اور ان کے حل کی تجاویز بھی دی۔ بعد ازاں صوبائی وزیر شرجیل انعام میمن کو ان کی خدمات پر کے سی سی آئی کی جانب سے خصوصی شیلڈ اور تحائف پیش کئے گئے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں