The news is by your side.

Advertisement

موسمِ گرما کی آمد – ڈی ہائیڈریشن موت کا سبب بن سکتی ہے

موسم سرما کی نسبت گرمیوں کے موسم میں انسانی جسم میں پانی کے ضروت یک دم بہت زیادہ ہو جاتی ہےجس کی وجہ سے گرمیوں میں پیاس بھی زیادہ محسوس ہوتی ہے اس کی سب سے اہم وجہ گرمیوں میں پسینے کا بہاؤ ہے۔ جس کی وجہ سے ہمارا جسم تو ٹھنڈا ہوجاتا ہے لیکن جسم میں موجود پانی بھی بہت جلد ختم ہوجاتا ہے اور ہمیں پانی پینے کے کچھ دیر بعد ہی دبارہ پیاس محسوس ہوتی ہے۔ اگرپانی کی اس ضرورت کو فوری طور پرپورا نہیں کیا جائے تو ہم بہت سی بیماریوں کا شکارہوسکتے ہیں۔

پانی کی کمی کی وجہ سے سب سے پہلے آپ جس بیماری کا شکار ہوتے ہیں وہ ڈی ہائیڈریشن ہے عام طورپر انسان ڈی ہائیڈریشن کا شکارتب ہوتا ہے جب اس کے جسم سے ضروری مادے زیادہ مقدارمیں خارج ہو جائیں، ان مادوں میں پوٹاشیم اور سوڈیم کے مقداریں شامل ہیں، جو کہ پٹھوں اوردماغ کے فنکشنز کو چلانے کے لئے ضروری ہیں۔ ہرعمر کے لوگ ڈی ہائیڈریشن کا شکارہو سکتے ہیں لیکن بچوں اوربوڑھوں میں اس بیماری کا اثرکافی زیادہ ہوتا ہے کیونکہ یہ دونوں عمریں ایسی ہیں جن میں انسانی جسم میں بیماروں سے لڑنے کی طاقت کم ہوتی ہے
اس لئے بچوں اور بوڑھوں میں ہونے والی پانی کی کمی کو ہرگز نظرانداز نہ کریں، کیونکہ اس کا بروقت علاج نہ کیا جائے تو موت بھی واقع ہو سکتی ہے۔

بچوں اور بوڑھوں کے ساتھ ساتھ یہ بیماری نوجوان کے لیے بھی خطرناک ثابت ہوسکتی ہے اکثراوقات یہ بھی دیکھنے میں آیا ہے کہ بعض لوگ کام کے دوران پانی پینے کی طرف دھیان نہیں دیتے جس کی وجہ سے ان کے جسم میں آہستہ آہستہ پانی اوراہم مادوں کی کمی ہونے لگتی ہے اوراچانک یہ بڑھ کر کسی پچیدہ بیماری کو پیدا کر دیتی ہے لیکن اگراس بیماری کو شروع میں ہی تشخیص کرکے اس پر قابو پالیا جائے تو بعد کے ہونے والے پچیدہ مسائل سے بچاؤ بھی ممکن ہے۔

ڈی ہائیڈریشن سے بچاؤ کے لئے اس کی علامات کے بارے میں علم ہونا نہت ضروری ہے جن کا ذکر ذیل میں کیا گیا ہے

بہت زیادہ پیاس کا لگنا

بھوک کا نہ لگنا

کمزوری محسوس ہونا

منہ، آنکھوں اور ہونٹوں کا بار بار خشک ہونا

پٹھوں کا کچھاو

سر درد

پسینے کا نا آنا

دل کی دھڑکن کا تیز ہونا

یورین کی مقدار میں کمی

ہمارا جسم اپنی ضروت کو پورا کرنے کے لئے پانی کا ایک تہائی حصہ ہمارے پیے گئے پانی سے لیتا ہے جبکہ کے ایک تہائی حصہ ہماری کھائی گئی غذا سے لیتا ہے۔ اگرہمارے جسم میں پانی 2فیصد بھی کم ہوجائے تو ہمارا جسم نڈھال ہونے لگتا ہے اورجسم کے کم کرنے کے طاقت بھی کافی حد تک کم ہو جاتی ہے۔ ڈی ہائیڈریشن کا مرض لاحق ہونے کی سب سے بڑی وجہ تو پانی کی کمی کو ہی ٹھہرایا جاسکتا ہے لیکن جسم میں پانی کی کمی کی بھی کئی وجوہات ہو سکتی ہیں، جن کی بنا پرآپ کا جسم پانی کی کمی محسوس کرتا ہے۔ چند اہم اسباب اوروجوہات ذیل میں بیان کئے گئے ہیں۔

ڈائیریا

قے کرنا

بہت زیادہ پسینے کا آنا

پانی کم پینا

جسم میں نمکیا ت کی کمی

دھوپ میں زیادہ وقت گزارنا

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں