site
stats
اہم ترین

ایوان جمہوریت کوبچانے کیلئے سیسہ پلائی دیوار بن چکا، خورشید شاہ

اسلام آباد:  پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں پیپلز پارٹی کے رہنما اور قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ نے کہا ہے کہ قائد حزبِ اختلاف سید خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ جمہوریت بچانے کے لئے ایوان سسہ پلائی دیوار بن گئی لیکن سازش کی گئی کہ اس کو تقیسم کردیا جائے۔

انھوں نے کہا کہ حکومت اپوزیشن اتنی قریب ہے کہ کوئی سوئی بھی نہیں گزار سکتا، ماضی میں یہی ہوا ہے کہ اپوزیشن برے حالات مین فائدہ اٹھاتی تھی۔  جہموریت اور اپوزیشن کوئی سازش کامیاب نہیں ہونے دیں گے، حالات نے حکومت اور اپوزیشن کو قریب کردیا ہے۔

سید خورشید شاہ نے کہا کہ سیاستدان کو پانی سے نرم اور شہد سے زیادہ میٹھا ہونا چاہیئے، جووزیراعظم کے جذبات ہے وہی ہمارے ہیں،، ہم نے نواز شریف پر کوئی احسان نہیں کیا۔

خورشید شاہ  نے کہا کہ اعتزاز احسن  کئی سالوں سے سیاست میں ہے ، میں وہ تصویر نہیں بھول سکتا جب اعتزاز احسن کی بیوی کو لاٹھیاں ماری گئی ، انھوں نے کہا کہ اپوزیشننے کہا کہ میاں صاحب ڈٹ جائیں ، استعفی نہ دیں، ساری اپوزیشن آپ کے ساتھ کھڑی ہے۔

انھوں نے کہا کہ پارلیمنٹ ملک کا سب سے بڑا ادارہ ہے ، آیئن کا تحفظ کرتا ہے ، یہ سمجھ نہیں آتا کہ جب ماحول پُر امن ہونے لگا اور اعتماد بحال ہونے لگا تو ایک وزیر نے آکر ماحول خراب کردیا، انھوں نے کہا کہ اللہ نے عجیب مخلاق پیدا کردی ، ایسی مخلوق نہیں دیکھی جو محسنوں کیلئے آستین کا سانپ بنے ہوئے ہیں۔

خورشید شاہ  نے کہا کہ وزیراعظم کا استعفیٰ نواز شریف نہیں، بلکہ جمہوریت کی کمزوری ہوگی، تمام سیاسی جماعتوں نے متحد ہوکر جمہوریت کے خلاف ہونے والی سازشوں کو ناکام بنا دیا ہے۔

اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ نے کہا کہ ہم سب ماضی کو بھلا کر پارلیمنٹ میں متحد ہوئے ہیں، لیکن حکومت میں کچھ لوگ ایسے ہیں جو سازشیں کررہے ہیں، سید خورشید شاہ نے چوہدری نثار کے بیان کی شدید الفاظ میں مذمت کی۔

خورشید شاہ نے کہا کہ ایک وزیر کے بیان نے ہمیں دہرائے پر لاکھڑا کردیا ہے،ایک طرف پانی اور دوسری طرف آگ ہے۔ انہوں نے کہا ہے سازش کی گئی کہ اپوزیشن کو تقیسم کردیا جائے ۔ وزیراعظم آپ کی صفوں میں پورس کے ہاتھی ہیں۔ آج کوئی نئی بات نہیں کہ آپ کی صفوں میں غدار پیدا ہوئے ہیں۔

خورشید شاہ نے نواز شریف کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ چوہدری نثار نے آپ کے پیٹھ میں چھرا گھونپا ہے، آپ کے ایک وزیر امتحان میں ڈال دیتا ہے، مشترکہ اجلاس بلایا گیا، جس کا اعزاز بھی اپوزیشن کو جاتا ہے ،اسکو سبوتاژ کیا گیا ہے کہ میاں صاحب سرخرو ہوکر نہ نکل آئے، انھوں نے کہا کہ چوہدری نثار کا رویہ اپکے چیمبر کے ساتھ بھی مناسب نہیں تھا،چوہدری نثار آپ کی جماعت کا ہیں، اس نے کوئی حد نہیں چھوڑی۔ چوہدری نثار نے نظام کیخلاف سازشیں کی ہے۔

انھوں نے کہا کہ ہمیں جہموریت کا پاس رکھنا ہے ، کمزوری نہ سمجھا جائے۔ چوہدری نثار کہتے ہیں کہ دوری بلائی ، دوری پر تو وہ خود ناچنے والے ہیں۔

انھوں نے نواز شریف سے کہا کہ آپکو فیصلہ کرنا ہوگا کہ چوہدری نثار ایوان میں آکر معافی مانگے۔ اور کمیٹی بنائی جائے جو معلوم کرے ایسا کیوں کیا گیا، ہم کوئی مطالبہ نہیں کرتے مگر کم از اکم سزا ہونی چاہیئے۔

سید خورشید شاہ نے چوہدری اعتزاز حسین پر لگائے گئے الزامات کی پر زور مذمت کرتے ہوئے وزیرِ اعظم سے اپیل کی کہ اس ایوان کے ارکان کی لاج رکھی جائے، انہوں نے مطالبہ کیا کہ چوہدری نثار اپنے بیان پر آکر معافی مانگے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top