نیب نے150بڑے مالیاتی اسکینڈلز کی فہرست سپریم کورٹ میں جمع کرادی -
The news is by your side.

Advertisement

نیب نے150بڑے مالیاتی اسکینڈلز کی فہرست سپریم کورٹ میں جمع کرادی

اسلام آباد: نیب نے بڑے مالیاتی اسکینڈل میںم ملوث 150 اعلیٰ سیاسی اور سرکاری شخصیات کی فہرست سپریم کورٹ میں جمع کرادی۔

تفصیلات کے مطابق جسٹس جواد ایس خواجہ کی سربراہی میں تین ججوں پر مبنی بنچ نے چیئرمین نیب منظور احمد غوری اور دیگر افسران کی جانب سے دائر کردہ درخواست کی سماعت کی۔

نیب رپورٹ میں وزیراعظم نوازشریف،شہبازشریف،اسحاق ڈار، آصف زرداری ،یوسف رضاگیلانی،راجہ پرویزاشرف،آفتاب شیرپاؤ،اسلم رئیسانی اورہمایوں برادران سمیت کئی بڑے سیاست دانوں اوربیورکریٹس کےمبینہ کرپشن کی داستانیں موجود ہیں

نیب رپورٹ میں وزیراعظم کےمعاون خصوصی ہارون اخترپر ستر کروڑ کی مشکوک ٹرانسیکشن،نواب اسلم رئیسانی کےدس کروڑ کے ناجائز اثاثہ جات،سابق وزیرداخلہ آفتاب احمدشیرپاؤ کیخلاف ایک ملین ڈالر کے ناجائزاثاثہ جات کی انکوائری بھی شامل ہے۔

بڑے بیوروکریٹس میں این آئی سی ایل کے سابق چیئرمین ایاز نیازی پر چارارب کی غیرقانونی سرمایہ کاری، سابق سیکریٹری ورکرز ویلفیئر بورڈ کے پی پرچودہ کروڑ کے ناجائز اثاثہ جات، ماڈل کسٹم سیکٹریٹ لاہورپراناسی کروڑ پان اسمگلنگ، سیکریٹری بلدیات سندھ احمد لُنڈ پرپچیس کروڑ کے ناجائز اثاثہ جات، سابق سیکریٹری ہاؤسنگ ذکی اللہ پر انتالیس کروڑ کے ناجائز اثاثہ جات اور یونیورسٹی آف پشاورکےوائس چانسلر پردس کروڑ روپے کی خوردبرد کےکیسزہیں۔

نجی گروپس میں ایم سی بی نجکاری کرپشن کےعلاوہ ناصرایچ شون کے خلاف سوا ارب قرضہ نادھندگی، یونس حبیب کے خلاف تین ارب کی نادھندگی، جہانگیرصدیقی کےخلاف دو ارب کے فراڈ، الحمرا ہلز اور ایڈن بلڈرزپر ایک ارب نوے کروڑ فراڈ کاکیس بھی رپورٹ میں شامل ہے۔

عدالت عظمیٰ نے نیب کی جانب سے پیش کردہ رپورٹ پر عدم اطمینان کا اظہار کیا۔

عدالت نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ نیب کو اس رپورٹ میں مزید دوکالم شامل کرنے چاہئیے جن میں یہ بتایا جائے کہ کب کس ملزم کے خلاف درخواست درج ہوئی اور کب اس کی تصدیق ہوئی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں