وادی چترال میں 5لاکھ سے زائدشہریوں کو خوارک کی شدید کمی کا سامنا -
The news is by your side.

Advertisement

وادی چترال میں 5لاکھ سے زائدشہریوں کو خوارک کی شدید کمی کا سامنا

چترال : وادی چترال کا زمینی رابطہ تاحال ملک کے دیگر حصوں سے بحال نہ ہوسکا، پانچ لاکھ سے زائد شہریوں کو خوارک کی شدید کمی کا سامنا ہے۔

تفصیلات کے مطابق وادی چترال کا زمینی رابطہ ملک کے دیگر حصوں سے اب تک بحال نہ ہوسکا ہے اور پانچ لاکھ افراد کو خوراک کی شدید قلت کا سامنا ہے، مون سون بارشوں کے بعد چترال کو سیلابی پانی نے چاروں سے گھیرے میں لیا ہوا ہے۔

سیلاب کی منہ زور موجوں نے گرم چشمہ، کیلاش، بمبورت، رمبور، حسن آباد اور مستونج سمیت دیگر علاقوں میں بڑے پیمانے پر تباہی مچادی، اب تک تین درجن سے زائد پُل،متعدد رابطہ سڑکیں اور کئی مکانات سلابی ریلوں میں بہہ گئے ہیں۔

ذرائع کے مطابق چترال کے چھبیس سے زائد دیہات میں تیار فصلوں کو بھی نقصان پہنچا ہے، وزیرِاعلیٰ خیبر پختونخوا پرویز خٹک نے چترال میں مون سون بارشوں سے ٹوٹنے والی سڑکوں اور پلوں کی فوری مرمت کی ہدایت کی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں