وزیرِاعظم استعفیٰ نہیں دینگے اورنہ ہی چھٹی پرجائیںگے،فضل الرحمٰن -
The news is by your side.

Advertisement

وزیرِاعظم استعفیٰ نہیں دینگے اورنہ ہی چھٹی پرجائیںگے،فضل الرحمٰن

اسلام آباد: جمیعت العلمائے پاکستان (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن نے کہا ہے کہ پارلیمنٹ کی توہین پوری قوم کی توہین ہے، وزیر اعظم استعفیٰ نہیں دینگے اور نہ ہی چھٹی پر جائیں گے،ان خیالات کا اظہار انہوں نے پارلیمنٹ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے کہا کہ دھاندلی کا رونا رونے والے خود کے پی کے میں حکومت کررہے ہیں، اسلام آباد کو ان جتھوں سے پاک کرنا حکومت کی انتظامی ذمہ داری ہے، ان کا کہنا تھا کہ اگر صوفی محمد پر بغاوت کا مقدمہ چل سکتا ہے تو عمران خان اورطاہرالقادری پر بھی آرٹیکل چھ کے تحت مقدمہ درج کیا جائے۔

آج پاکستان کی جمہوریت اور پارلیمنٹ پر حملہ ہوا ہے، پارلیمنٹ اور جمہوریت کو ختم کرنے کی سازش کی جارہی تھی جسے ناکام بنا دیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ اگر عمران خان اور طاہرالقادری میں ذرا سی بھی اخلاقی جرات ہے تو ان کو اپنی سیاسی موت کا اعتراف کرتے ہوئے دفن ہوجانا چاہئے ۔

پی ٹی وی پر قبضے سے پاکستان کی دنیا بھر میں بدنامی ہوئی کہ جب آرمی کے جوان پی ٹی وی کی عمارت میں پہنچے تو مظاہرین نے پاک فوج کے جوانوں کا پرتپاک استقبال کیا اور ان کے حق میں نعرے لگائے۔ یہ لوگ دنیا کو کیا پیغام یہ دینا چاہتے ہیں کہ پاکستانی فوج ایک ریاست کی حامی ہے اور پولیس دوسری ریاست کی ۔ یہ عناصر ملک کو تباہی کی جانب لے جانا چاہتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پی ٹی وی سمیت کسی ٹی وی چینل نے ہماری ریلی کی کوریج نہیں کی جبکہ اس ریلی میں ایک لاکھ سے زائد لوگ شریک تھے۔

پوری قوم کا دھیان آئی ڈی پیز سے ہٹا دیا گیا، دس لاکھ کی افراد کی ذمہ داری حکومت پر ہے لہٰذا حکومت ان کا بھی خیال رکھے ، حالیہ واقعات کے باعث چین کے وزیراعظم نے اپنا دورہِ پاکستان ملتوی کردیا۔

مولانا فضل الرحمٰن نے اسپیکر سے گلہ کرتے ہوئے کہا کہ آپ نے اب تک تحریک انصاف کے ممبرانِ پارلیمنٹ ۔کے استعفے کیوں قبول نہیں کئے گئے؟

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں