site
stats
پاکستان

جے آئی ٹی تحقیقات کے لیے سپریم کورٹ نواز شریف سے استعفیٰ لے، عمران خان

اسلام آباد: تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ نواز شریف نے گیلانی سے بطور وزیراعظم تحقیقات کے وقت استعفیٰ مانگا تھا، جب تک نوازشریف وزیراعظم ہیں تحقیقات میں رکاوٹیں آتی رہیں گی سپریم کورٹ نوازشریف سے استعفیٰ لے۔

عمران خان نے کہا کہ جب حکمرانوں کو معلوم ہوا کے وہ جے آئی ٹی کنٹرول نہیں کرسکتے تو ن لیگ نے جے آئی ٹی کو روزانہ کی بنیاد پر دھمکیاں دینی شروع کردیں، عوام کو سب واضح ہوگیا کہ کھیل کس طرح موڑا جاریا ہے۔

تحریک انصاف کے چیئرمین نے سپریم کورٹ سے درخواست کی کہ وہ پاناما جے آئی ٹی کی شفاف تحقیقات کےلیے نوازشریف سے استعفیٰ لیں کیونکہ اب کیس میں رکاوٹیں ڈالنے کی کوشش کی جارہی ہیں، نوازشریف کے مستعفیٰ ہونے تک جے آئی ٹی آزادنہ کام نہیں کرسکتی۔

پڑھیں: جے آئی ٹی نے دوبارہ پیشی کا سمن جاری نہیں کیا، حسین نواز

چیئرمین تحریک انصاف نے کہا کہ قطری شہزادے کے پیش نہ ہونے سے کیس ہی ختم ہوجاتا ہے، پاناما کیس کی اصل  تفتیش کے لیے نوازشریف، شہبازشریف، اسحاق ڈارکو طلب کیا جانا چاہیے۔

انہوں نے عندیہ دیا کہ پارٹی رہنماؤں کو کال دی ہے کہ وہ تیار رہیں اگر حکمران جماعت نے جے آئی ٹی پر اثر انداز ہونے کی کوشش کی تو تحریک انصاف سپریم کورٹ کے ساتھ کھڑی نظر آئی گی، ہم جے آئی ٹی کے فیصلے کا انتظار کررہے ہیں اُس کے بعد اپنے اگلے لائحہ عمل کا اعلان کریں گے۔

مزید پڑھیں: پاناما جے آئی ٹی:‌ حکومت برداشت کا اعلیٰ‌ مظاہرہ کررہی ہے، مشاہد اللہ

عمران خان نے شیخ رشید کے ساتھ اسمبلی کے باہر ہونے والی بدتمیزی کو منصوبہ بندی قرار دیا اور جمشید دستی کی گرفتاری پر مذمت بھی کر ڈالی، انہوں نے رکن قومی اسمبلی کی فوری رہائی کا مطالبہ بھی کیا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top