پاناما لیکس جوڈیشل کمیشن سپریم کورٹ میں چیلنچ -
The news is by your side.

Advertisement

پاناما لیکس جوڈیشل کمیشن سپریم کورٹ میں چیلنچ

اسلام آباد: پاناما لیکس کی تحقیقات کے لئے بنائے گئے جوڈیشل کمیشن کو سپریم کورٹ میں چیلنچ کر دیا گیا، جس میں وزیراعظم اور ان کے خاندان کی بیرون ملک دولت اور آف شور کمپنیوں کی تحقیقات کی جانی ہے.

سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں بیرسٹر ظفراللہ خان کی جانب سے پٹیشن دائر کی گئی، جس میں پاناما لیکس کی تحقیقات کے لئے بنائے گئے جوڈیشل کمیشن کو چیلنچ کیا گیا ہے.

پٹیشن میں کہاگیا ہے کہ پاناما لیکس کرپشن ایک سیاسی معاملہ ہے اور اس کی تحقیقات کے لئے بنایا گیا کمیشن محظ دکھاوے کے کچھ نہیں ہے.

درخواست گزار کے مطابق پاناما لیکس کی تحقیقات کے لئے پارلیمانی کمیٹی تشکیل دی جائے.

اگر کمیٹی کی تحقیقات میں حکومت کےخلاف کرپشن کے الزامات ثابت ہو جائیں، تو ایک تحریک عدم اعتماد پارلیمنٹ میں پیش کی جائے.

درخواست گزار کے مطابق پارلیمنٹ کے قوانین کےتحت حکومت کا احتساب کیا جاسکتا ہے، جبکہ جوڈیشل کمیشن کے قیام کو روکا جائے اور حکومت کی جانب سے عدالتی کمیشن کے قیام کی درخواست کو کالعدم قرار دیا جائے.

اس سے قبل 22 اپریل کو وزیراعظم نواز شریف کی جانب سے کہا گیا تھا کہ اگر پاناما لیکس ٹیکس اسکینڈل میں ان کا خاندان ملوث ہوا تو وہ اپنے عہدے سے مستعفی ہو جائیں گے.

واضح رہے کہ پانامہ لیکس پیپرز میں جہاں دنیا بھر کے لوگ نامزد ہیں وہی پاکستان کے وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف کے صاحبزادوں حسن اور حسین نواز اور ان کی صاحبزادی مریم صفدرکا نام بھی شامل ہے.

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں