site
stats
اہم ترین

پاکستانی شاہین بھارتی سورماؤں کوشکست دینےکے لئے بےقرار

سڈنی: پاکستانی کرکٹ ٹیم کے کھلاڑیوں نے ہرصورت بھارت کو شکست دینے کے عزم کا اظہا رکردیا، کپتان مصباح الحق کہتے ہیں کہ اب کی بار ہم تاریخ بدلنے کے لئے جان لڑادیں گے۔

فرانسیسی خبررساں ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے پاکستانی کرکٹ ٹیم کے کلھلاڑیوں کا مورال بے حد بلند تھا اورسب کے لبوں پرایک ہی صدا تھی کہ ہمیں جیتناہے۔

پاکستان اور بھارت کا ورلڈ کپ میں پہلی بار سامنا 1992 میں ہوا تھا اور تب سے اب تک پاکستان کسی بھی ورلڈ کپ میں بھارت کوہرانے میں ناکام رہاہے۔ 1992 کا ورلڈ کپ بھی نیوزی لینڈ اورآسٹریلیا میں ہی ہوا تھا۔

کپتان مصباح الحق کا کہنا ہے کہ ’’اب کی بارہم اس بد شگونی کوختم کردیں گے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ ’’ہم اب کی بار تاریخ بدلنے کے لئے اپنی بھرپورتوانائیوں کا اظہارکریں گے‘‘۔

نجانے کیوں پہلے تمام تر میچز ہم ہار گئے، شاید سابقہ ٹیمیں ورلڈ کپ جیسے اہم ٹورنامنٹ کے سب سے اہم میچ کاپریشر برداشت نہیں کرپائیں‘‘۔

پاکستان نے1992، 1996، 1999اور2011 میں بھارت کی جانب سے دیا گیا ٹارگٹ حاصل کرنے کی کوشش کی لیکن ناکام رہے۔ 2003 میں بھارت نے پاکستان کی جانب سے دیا گیا ٹارگٹ حاصل کرلیا تھا۔

اس موقع پرمقبول آل راوٗنڈر شاہد آفریدی کا کہنا تھا کہ ’’کوئی بھی شے حتمی نہیں ہوتی، ہمیشہ ایک موقع ضرور ہوتا ہے‘‘۔

انہوں نے کہا کہ اب کی باراس اہم اور مشکل ترین میچ کو جیت کرہم تاریخ کا رخ تبدیل کردیں گے۔

اگر ہم جیت جیت گئے تو پھرورلڈ کپ کے باقی ماندہ میچزمیں ٹیم پرکوئی دباؤ نہیں ہوگا اسی لئے ٹیم انتظامیہ یہ میچ جیتنے کے لئے بیتاب ہے۔

شاہد آفریدی 1999 اور2003 میں بھارت کے خلاف کھیلے گئے ورلڈ کپ میں پاکستانی ٹیم کا حصہ تھے اور2011 کے ورلڈ کپ میں پاکستانی ٹیم کی کپتانی کررہے تھے جب پاکستان موہالی میں بھارت سے ورلڈ کپ کے سیمی فائنل میں شکست کھا گیا تھا۔

پاکستان اوربھارت کے درمیان کھیلے گئے ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ میچز میں بھی پاکستان بھارت کو شکست دینے میں ناکام رہا تھا۔

پاکستان نےبھارت کو آخری بڑی شکست2009 میں ساوٗتھ افریقہ میں کھیلی گئی چیمئینز ٹرافی میں دی تھی۔

سینیئر بلے باز یونس خان کا کہنا ہے کہ ہم پہلا میچ بھارت سے کھیل رہے ہیں تو پاکستان کے لئے سب سے بہترین صورتحال یہ ہے کہ وہ ورلڈ کپ کا آغازبھارت کو شکست دے کرکرے۔

دنیا کے سب لمبے فاسٹ باؤلر عرفان پرامید ہیں کہ وہ اہم وکٹیں لینے میں کامیاب رہیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ وہ جانتے ہیں کہ ان سے کیا توقعات کی جارہی ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ میں پہلے بھی بھارت کے خلاف بہترین کھیل کا مظاہرہ کرچکا ہوں اس لئے میں پراعتماد ہوں کہ اب کی بار بھی ایسا ہی ہوگا۔

فاسٹ باؤلروہاب ریاض کا کہنا ہے کہ پاکستان اتوارکوجشن منائے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ گذشتہ ورلڈ کپ سے میری اچھی یادیں وابستہ ہیں میں نے پانچ وکٹیں لی تھیں اوران میں سب سے یادگار لمحہ یووراج کی وکٹ لیناتھا‘‘۔

’’میں پھرسے وہی کرنا چاہتا ہوں اور اب کی بار میں کھلاڑیوں سے درخواست کروں گا کہ میری محنت جائع نہ کریں۔ وہ میدان میں جائیں اور میچ جیتیں کیونکہ آخری بار میں پانچ وکٹیں لے کر بھی جشن نہیں منا پایا تھا‘‘۔

اے ایف پی

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top