The news is by your side.

Advertisement

پشاور آرمی پبلک اسکول سمیت ملک بھر کے سرکاری ونجی اسکول کھل گئے

کراچی : دہشت گردی کا نشانہ بننے والے پشاور آرمی پبلک اسکول سمیت ملک بھر کے سرکاری ونجی اسکول کھل گئے ہیں، موسم سرما کی اضافی کے تعطیلات کے بعد اسکولوں اور دیگر تعلیمی اداروں میں تدریسی عمل بحال ہوگیا تاہم پہلے روز حاضری معمول سے انتہائی کم رہی۔

  سانحہ پشاور کے بعد سندھ حکومت نے بھی اسکولوں کی انتظامیہ کو سیکیورٹی کے انتظامات بہتر بنانے کی ہدایت کی ہیں۔ شہر کے بعض سرکاری اسکولوں میں جہاں سیکورٹی انتظامات موثر نہیں تھے وہ مزید تین دن تعلیمی سرگرمیاں معطل رہیں گی۔

سرکاری تعلیمی اداروں کی سیکورٹی کے حوالے حکومتِ سندھ اور محکمۂ تعلیم کے حکام نے جو دعوے کئے وہ دھرے کے دھرے رہ گئے جبکہ شہر میں چند بڑے اسکولوں کی انتظامیہ کی جانب سے سیکورٹی کے انتظامات اپنی مدد آپ کے تحت کئے گئے جبکہ کراچی انتظامیہ اور پولیس کی جانب سے چند اسکولوں میں سیکورٹی کے انتظامات نظر آئے۔

تاہم کسی سرکاری اور نجی اسکولوں کے اطراف پولیس کی جانب سے اضافی پیٹرولنگ نظر نہیں آئی، والدین اور بچوں میں سیکورٹی کے حوالے اب بھی خوف پایا جاتا ہے ،جس کی وجہ پہلے روز اسکولوں میں حاضری معمول سے انتہائی کم رہی جبکہ صوبائی وزیر آج اسکولوں کی سیکورٹی سے متعلق اعلی کے اجلاس کی صدارت سندھ اسمبلی کے کمیٹی روم کریں گے، جس صورت حال پر مزید غور کیا جائے گا۔

سانحہ پشاور کے بعد آج ملک بھر کے تعلیمی اداروں میں تدریسی عمل شروع ہو گیا ہے، پنجاب میں اسکولوں کیلئے حفاظتی اقدامات کرتے ہوئے  باؤنڈری وال بلند اور خاردار تاریں لگا دی گئیں ہیں جبکہ نامکمل سیکیورٹی پر پنجاب کے مشنری اسکول مزید سات روز بند رہیں گے۔

اسلام آباد میں بھی بیشتر اسکول کھل گئے ہیں، اسلام آباد کے آدھے سے بھی کم تعلیمی اداروں کی سیکورٹی بہتر ہوئی ہے، پولیس نے چوکیداروں کو شرپسند عناصر پر نظر رکھنے کی ہدایت کردی، سانحہ پشاور کے بعد ضلعی انتظامیہ نے سرکاری و غیر سرکاری سکولوں کا ڈیٹا جمع کرکے سیکورٹی بہتر بنانے کا حکم دیا تھا۔

کھلنے والے اسکولوں میں پشاور کا آرمی پبلک اسکول بھی شامل ہے، جسے دہشتگردوں کے حملے کے بعد بند کردیا گیا تھا۔

بلوچستان میں سرما کی تعطیلات مارچ تک جاری رہیں گی۔

مختلف شہروں میں تعلیمی اداروں کی دیواروں کو اونچا کردیا گیا ہے، داخلی اور خارجی راستوں پر اسنیپ چیکنگ کے انتظامات کیے گئے ہیں، چوکیداروں کو اسلحہ بھی فراہم کیا گیا ہے۔

واضح رہے سانحہ پشاور کے بعد تعلیمی اداروں میں حفاظتی انتظامات موثر بنانے کیلئے اسکول اور کالجز کی چھٹیوں میں 10دن کا اضافہ کیاگیا تھا۔

یاد رہے کہ 16 دسمبر کو پشاور کے آرمی پبلک اسکول پر کالعدم تحریک طالبان کے حملے کے نتیجے میں 132 بچوں سمیت 144 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں