site
stats
انقلاب مارچ

پی اے ٹی، پی ٹی آئی کارکنوں کی نظربندی کالعدم قرار، فوری رہائی کا حکم

لاہور: ہائی کورٹ نے پاکستان عوامی تحریک اور تحریکِ انصاف کے کارکنوں کی نظربندی کالعدم قرار دیتے ہوئے فوری رہائی کا حکم دے دیا ہے۔

لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس قاسم نےنظر بند افراد سے متعلق درخواستوں کی سماعت کی، محکمۂ داخلہ پنجاب نے رپورٹ میں بتایا کہ پاکستان عوامی تحریک اور تحریکِ انصاف کے پانچ سو بیس کارکن رہا کردیئے ہیں،  چھتیس ایسے کارکن ہیں جو ابھی نظر بند ہیں، جو راولپنڈی ایئرپورٹ ہنگامہ آرائی میں ملوث ہیں، جنہیں ایک ایک لاکھ روپے کے ضمانتی مچلکے جمع کرانے کی ہدایت کی گئی تھی لیکن کسی نے مچلکے جمع نہیں کرائے۔

عدالت نے وکلاء کے دلائل سننے کے بعد پی اے ٹی اور پی ٹی آئی کے نظربند تمام افراد کو فوری رہا کرنے کا حکم دیا اور ساتھ ہی عدالت نے نظربندی اور ضمانتی مچلکوں پرمحکمۂ داخلہ اور ڈی سی او جہلم کا حکم کالعدم قرار دے دیا اور قراردیا کہ نظر بند افراد کو ڈیلی ویجز ادا کرنے کے حوالے سے تفصیلی فیصلے میں حکم دیا جائے گا۔

گذشتہ سماعت میں آئی جی جیل نے لاہورہائیکورٹ میں تحریری رپورٹ جمع کرائی تھی، جس کے مطابق پاکستان عوامی تحریک اور تحریکِ انصاف کے تین ہزار پانچ سو نو کارکن نظر بند کئے گئے جبکہ عدالت نے نظر بندی کی تفصیلی وجوہات طلب کی تھیں۔

عدالت نے ہوم سیکرٹری پنجاب کو 551 کارکنوں کی رہائی سے متعلق پچیس ستمبر تک فیصلے کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے حکم دیا تھا کہ عدالتی حکم پر عمل نہ کیا گیا تو پھر پنجاب حکومت کو تمام نظر بند کارکنوں کو ڈیلی ویجز کی ادائیگی کا حکم جاری کریں گے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top