The news is by your side.

Advertisement

پی ٹی آئی کارکن کی ہلاکت: میاں افتخار کے خلاف مقدمہ درج

پشاور: اے این پی کے جنرل سیکریٹری اورسابق صوبائی وزیراطلاعات میاں افتخارکومحافظ سمیت پی ٹی آئی کے کارکن کے قتل کے الزام میں گرفتارکرلیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق عوامی نیشنل پارٹی کےمرکزی سیکریٹری جنرل میاں افتخار حسین کو پاکستان تحریک انصاف کے کارکن کے قتل کے الزام میں گرفتارکیا گیا۔

میاں افتخار اور ان کے محافظ کوعلی الصبح گرفتار کرکے پبی تھانے منتقل کیا گیا جہاں ان سے تحریک انصاف کے کارکن کے قتل سے متعلق تفتیش کی گئی۔

ابتدائی تفتیش کے بعد پولیس نے مزید کاروائی کے لئے میاں افتخار کو پولیس اہلکاروں کی تحویل میں نوشہرہ کی کچہری میں پیش کیا جہاں ان کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا۔ مقدمہ تحریک انصاف سے تعلق رکھنے والے شیر خان نامی شخص نے درج کرایا ہے۔

واقعے کے بعد اے این پی کے کارکنان کی کثیر تعداد تھانے کے سامنے جمع ہوگئی اور میاں افتخار کی گرفتاری کے خلاف احتجاج کیاگیا۔

میاں افتخار نے تمام الزامات کی سختی سے تردید کرتے ہوئے کہا کہ ’’بیٹے کا دکھ دیکھا ہے کسی کے قتل کا سوچ بھی نہیں سکتا‘‘۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے میاں افتخار کاکہنا تھا کہ پی ٹی آئی کے کارکنان جیت کی خوشی میں جشن مناتے ہوئے فائرنگ کررہے تھے اور اسی دوران ان کا کارکن جاں بحق ہوا اور انہیں قطعی علم نہیں کہ مقتول کی ہلاکت کیسے ہوئی۔

انہوں نے مزید کہا کہ ’’مجھے حیرانگی ہوئی جب میرے گھر پر گرفتاری کے لئے چھاپہ مارا گیا حالانکہ پی ٹی آئی کی ریلی میں فائرنگ کرنے والے افراد میں سے کسی کو گرفتار نہیں کیا گیا‘‘۔


گزشتہ رات بلدیاتی انتخابات کے نتائج کے بعد نوشہرہ میں پی ٹی آئی کے جلوس پرفائرنگ کے نتیجے میں پی ٹی آئی کا کارکن جاں بحق ہوگیا تھا۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز منعقد ہونے والے بلدیاتی انتخابات میں ہونے والے کل 14 افراد فائرنگ اورتشدد کے مختلف واقعات میں موت کے گھاٹ اتاردئیے گئے تھے۔

خیبر پختونخواہ میں منعقد ہونے والے بلدیاتی انتخابات میں حکومتی جماعت تحریک انصاف کو برتری حاصل ہوئی ہے۔

عوامی نیشنل پارٹی کا کہنا ہے کہ میاں افتخار کی رہائی کے لئے کل عدالت سے رجوع کیا جائے گا۔

اس موقع پر اے این پی کے رہنماء غلام احمد بلور کا کہنا تھا کہ افسوس کی بات یہ ہے کہ جس شخص نے آج تک کسی کو تھپڑ نہیں مارا اسے قتل کے الزام میں ملزم قرار دے دیا گیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں