site
stats
اہم ترین

چوہدری اسلم پرحملہ خودکش تھا، ابتدائی رپورٹ تیار

تحقیقاتی ٹیموں نے چوہدری اسلم پرحملے کی ابتدائی رپورٹ تیار کرلی، ڈی آئی جی ظفر بخاری کا کہنا ہے کہ حملہ خودکش تھا، جس میں دو سو کلو باروداستعمال ہوا،  دو دن پہلے طالبان ترجمان نے چوہدری اسلم کو فون پردھمکیاں بھی دی تھیں۔

تحقیقاتی ٹیمیں چوہدری اسلم پر حملے کی تفتیش کرنے میں مصروف ہیں، راجہ عمرخطاب کا کہنا ہے کہ چوہدری اسلم پر گاڑی میں موجود خودکش بمبار نے حملہ کیا، دھماکا چوہدری اسلم کے قریب آکر کیا گیا، ابتدائی رپورٹ کے مطابق دھماکا خیز مواد نیلے رنگ کے ڈبوں میں رکھا گیا تھا اور دو سو کلوبارود استعمال کیا گیا۔

چوہدری اسلم کے گھر پر حملے اور اس حملے میں ایک جیسا مواد استعمال ہوا جبکہ امریکی سفارتخانے، سول لائنز میں دھماکا خیز مواد سے بھی مماثلت ہے، ڈی آئی جی ظفر بخاری نے کہا کہ حملے میں ہائی ایکسپلوز استعمال کیا گیا، اسپتال سے ٹیکسی ڈرائیور کو حراست میں لیا گیا ہے۔

ظفربخاری نے کہا کہ دو دن پہلے چوہدری اسلم کی کالعدم تحریک طالبان کے ترجمان شاہد اللہ شاہد سے ٹیلی فون پر گفتگو ہوئی تھی جس میں کالعدم تحریک طالبان کی جانب سے دھمکیاں دی گئی تھیں تاہم چوہدری اسلم نے دہشت گردی کے خلاف لڑنے کے عزم کا اظہار کیا تھا۔

تحقیقاتی ذرائع کا کہنا ہے دھماکے میں زخمی اہلکاروں سے بھی بیانات لیے جائیں گے، حملے کے دوسرے روز بھی راجہ عمرخطاب، نیاز کھوسو سمیت اعلیٰ افسران اور دیگرتحقیقاتی اداروں نے جائے وقوع کا جائزہ لیا اور مزید شواہد اکھٹے کئے۔

لیاری ایکسپریس وے عام ٹریفک کیلئے بند رکھا گیا، فرانزک ٹیم دھماکے کے بعد کے شواہد اکھٹے کرنے کے عمل میں مصروف رہی، پولیس کی ہدایت پر لیاری ایکسپریس وے اور عیسیٰ نگری قبرستان سے حملے کے شواہد اکھٹے کئے گئے۔

 

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top