site
stats
انٹرٹینمںٹ

چین میں داڑھی بڑھانے پرسزا ’بے معنی‘ ہے، سماجی رہنما

 

بیجنگ:چین کے مسلم اکثریتی علاقے سنکیانگ میں ایک شخص کو داڑھی بڑھانے کی پاداش میں چھ سال کی سزا سنائی گئی جسے ایک گروپ نے بے معنی قرار دے دیا۔
دلشادرشید عالمی یوغر کانگریس کے ترجمان ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ یہ مقدمہ خالصتاً سیاسی نوعیت کا ہے اور اس نوعیت کے مقدمات کا یوغر قبیلے کے ترکی بولنے والے مسلمانوں کو اکثر و بیشتر سامنا کرنا پڑتا ہے۔

انہوں نے اپنے بیان میں کہاکہ ’’ ایسا سلوک ناقابلِ برداشت اور بے معنی ہے دنیا میں ایسا کہیں نہیں ہوتا۔ اس سے چین کے معاندانہ رویے کا پتہ چلتا ہے‘‘۔

انہوں نے مزید کہا کہ ’’ اگر کوئی چینی شخص داڑھی بڑھائے تو وہ اس کا ذاتی معاملہ ہے جس میں وہ آزاد ہے لیکن اگر کوئی یوغر شخص داڑھی بڑھائے تو اسے مذہبی انتہا پسند قرار دے دیا جاتاہے‘‘۔

چین چاہتاہے کہ یوغر قبائل کے لوگ اپنی تہذیب ترک کرکے چینی طور طریقے اپنالیں۔

واضح رہے کہ کاشغر کی عدالت نے 38 سالہ یوغر شخص کو دارھی بڑھانے کے جرم میں چھ سال جبکہ اس کی زوجہ کو نقاب پہنے کے جرم میں دو سال کی سزا سنائی ہے۔

مذکورہ شخص نے 2010 میں داڑھی بڑھانا شروع کی تھی اور اسکی زوجہ نے برعہ پہنا شروع کیا تھا اور مقامی حکام ان روایات کی حوصلہ شکنی کرتے ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top