ڈینیل پرل قتل کیس، ملزم ہاشم کو90روز کیلئے جیل میں رکھنے کا حکم -
The news is by your side.

Advertisement

ڈینیل پرل قتل کیس، ملزم ہاشم کو90روز کیلئے جیل میں رکھنے کا حکم

حیدرآباد: آئی جی جیل خانہ جات نصرت حسین منگن کا کہنا ہے کہ ڈینیئل پرل کیس میں بری ملزم سید محمد ہاشم کو حکومت سندھ نے ایم پی او کے تحت نوے روز کیلئے قید میں رکھنے کا حکم جاری کیا ہے۔

حیدرآباد نارا جیل میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے آئی جی جیل خانہ جات نصرت منگن نے بتایا کہ سینٹرل جیل حیدرآباد میں اس وقت پچاسی انتہائی خطرناک قیدی موجود ہیں۔

کراچی سینٹرل جیل میں سرنگ کے واقعے کی تحقیقات جاری ہے، کچھ گرفتاریاں بھی ہوئی ہیں جس کے بعد کراچی ،حیدرآباد اورسکھر جیل میں ہائی الرٹ ہے، نصرت منگن نے کہا کہ محرم الحرام کے دوران رینجرز پولیس اورایف سی کی مدد سے جیلوں کی سیکیورٹی مزید سخت کررہے ہیں۔

دوسری جانب صوبائی وزیر جیل خانہ جات منظور حسین وسان نے حیدرآباد میں نارا جیل کا دورہ کیا اورجیل اہلکاروں کی ساتویں پاسنگ آوٹ پریڈ کا معائنہ کیا۔ منظور وسان کا کہنا تھا کہ تمام جیلوں کی سیکورٹی سخت کردی گئی ہے۔

گزشتہ روز امریکی صحافی ڈینئیل پرل قتل کیس کے ملزم قاری ہاشم عرف حارث کو حیدرآباد میں قائم انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے جرم ثابت نہ ہونے پر بری کردیا تھا۔

حیدرآباد میں قائم انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت میں امریکی صحافی ڈینئیل پرل قتل کیس کے ملزم قاری ہاشم عرف حارث کے وکیل کی جانب سے 265 کے کے تحت درخواست دائر کی گئی تھی، جس کے بعد عدالت میں طویل عرصے سے سماعتوں کے بعد شواہد نہ ملنے اور جرم ثابت نہ ہونے پر ملزم قاری ہاشم عرف حارث کو بری کردیا ہے۔

اس سے قبل امریکی صحافی ڈینئیل پرل قتل کیس کا ٹرائل جولائی 2002ء میں سینٹرل جیل حیدرآباد ہوا تھا، جس میں انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے جرم ثابت ہونے پر احمد سعید عمر شیخ کو سزائے موت جبکہ 3ملزمان شیخ عادل، فہد نسیم اور سلمان ثاقب کو عمر قید کی سزا سنائی تھی۔

واضح رہے کہ عدالت کی جانب سے بری کئے گئے ملزم قاری ہاشم عرف حارث کو مذکورہ کیس میں کراچی سے گرفتار کیا گیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں