The news is by your side.

Advertisement

کالعدم جند اللہ نے مولانا فضل الرحمان پر خود کش حملے کی ذمے داری قبول کرلی

کوئٹہ: مولانا فضل الرحمان خود کش حملے میں بال بال بچ گئے، حملے میں جے یو آئی کے دو کارکن جاں بحق اور تیئس زخمی ہوگئے، کالعدم جند اللہ نے حملے کی ذمے داری قبول کرلی ہے۔

مولانا فضل الرحمان کوئٹہ میں مفتی محمود کانفرنس سے خطاب کر کے جلسہ گاہ سے باہر آئے ہی تھے کہ ایک نوجوان نے ان کی گاڑی کے سامنے آنے کی کوشش کی، انکے سیکیورٹی رضا کاروں نے مشکوک نوجوان کو روکنے کی کوشش کی تو اس نے خود کو دھماکے سے اڑا لیا ۔

دھماکہ کے بعد افراتفری پھیل گئی اور لوگ جان بچانے کیلئے دوڑ پڑے۔

مولانا فضل الرحمان کی گاڑی مکمل تباہ ہوگئی ، بم پروف گاڑی کی وجہ سے جمعیت علمائےاسلام کے سربراہ اور ان کے ساتھی تو محفوظ رہے تاہم جے یو آئی کے دو کارکنان جاں بحق اورتیئیس زخمی ہوگئے۔

اسپتال ذرائع کا کہنا ہےکہ زخمیوں میں سے دو کی حالت تشویشناک ہے، بم ڈسپوزل اسکواڈ نے دھماکے کی جگہ کی چھان بین کے بعد اسے کلیئر قرار دے دیا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں