کراچی:سینٹرل جیل میں سرنگ سے متعلق مزید تفصیلات منظرعام پر -
The news is by your side.

Advertisement

کراچی:سینٹرل جیل میں سرنگ سے متعلق مزید تفصیلات منظرعام پر

کراچی :سینٹرل جیل میں دہشت گردوں نے اپنے ساتھیوں کو چھڑانے کا جو سرنگ بنا ئی تھی اس کی مزید تفصیلات سامنے آگئی ہے۔

کراچی سینٹرل جیل میں سرنگ بناکر ساتھیوں کو چھڑانے کامنصوبہ ناکام بنانے کے بعد رینجرز کا سینٹرل جیل اور اطراف کی آبادی میں سرچ آپریشن جاری ہے اور اس دوران جہادی لٹریچراور سیاسی جماعتوں کے پرچم برآمد کیے گئے ہیں۔

کراچی سینٹرل جیل کے قریب کھودی جانے والی سرنگ کے سے متعلق مزید تفصیلات سامنے آرہی ہیں جس کے مطابق جیل کے فرنٹ سے دوسرا گھر جہاں دہشتگردوں نے اپنے مذموم مقصد کیلئے سرنگ کھو دی وہ مکان پولیس اہلکار نے بھولو نامی رکشہ ڈرائیور سے خریدا تھا، جسے پولیس اہلکار نے چار گنا زائد قیمت پر دہشت گردوں کو فروخت کردیا۔

دہشت گردوں نے ابتدائی طور پر اہل علاقہ کو بتایا کہ وہ یہاں اچار کا کارخانہ قائم کر رہے ہیں، اسی دوران نیلے رنگ کے ڈرم اور متعدد بیگز مذکورہ مکان میں لائے گئے، مکان خریدنے والوں نے اپنا حلیہ بھی بدل لیا اور کلین شیو ہوگئے۔

دہشت گرد سو(100) فٹ سرنگ کھود چکے تھے اور چالیس سے پچاس فٹ کھودنا باقی تھی۔

رپورٹ کے مطابق جیل میں موجود کالعدم جماعتوں کے اہم رہنماؤں کو سرنگ کے ذریعے رہا کرانا تھا، منصوبے کی ناکامی حساس اداروں کی بڑی کامیابی کیساتھ ساتھ الارمنگ بھی ہے کہ دہشت گردوں کا نیٹ ورک کس حد تک خطرنا ک اور وہ جدید کرمنا لو جی سے واقف ہیں۔

گذشتہ روز سرنگ ملنے کے بعد رینجرز نے سینٹرل جیل میں سرچ آپریشن کیا تھا، ترجمان رینجرز کے مطابق رینجرز نے سینٹرل جیل میں بیرکوں کی مکمل تلاشی لی، سرچ آپریشن کے دوران قیدیوں کے قبضے سے قینچیاں ،سیڑھیاں اور جہادی لٹریچر برآمد ہوا۔ بعض قیدیوں کے قبضے سے سیاسی جماعتوں کے پرچم اور ریڈیو اور بجلی کی تاریں بھی ملی ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں