کراچی:پولیس اہلکاروں کی ٹارگٹ کلنگ میں پھر تیزی -
The news is by your side.

Advertisement

کراچی:پولیس اہلکاروں کی ٹارگٹ کلنگ میں پھر تیزی

کراچی:شہر قائد میں شہریوں کےساتھ ساتھ پولیس پرحملوں کاسلسلہ جاری ہے،اےآئی جی کراچی کے دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے،جہاں دو پولیس اہلکاروں سمیت بارہ افراد کو موت کی نیند سلادیا گیا۔

کراچی میں بدامنی کی لہر برقرارپولیس اہلکاروں کی ٹارگٹ کلنگ میں پھرتیزی آگئی ہے۔ سخی حسن کے چورنگی کے نزدیک نامعلوم ملزمان نے فائرنگ کرکے سب انسپکٹر رانا سرور کو موت کے گھاٹ اتاردیا،فورکے چورنگی کےقریب بھی پولیس اہلکار کو نشانہ بنایا گیا،حیدری تھانے پرنامعلوم ملزمان نےکریکرسےحملہ کیا جس دو پولیس اہلکارزخمی ہوئے،نارتھ ناظم آباد میں سیفی کالج کےقریب فائرنگ کرکے ریٹائرڈ پروفیسرانیس انور کو قتل کردیا گیا،جنجال گوٹھ میں فائرنگ سےعمران نامی شخص لقمہ اجل بنا۔

پرانا گولیمارمیں ندی سے ایک لاش ملی ناردرن بائی پاس میں ہاتھ پاؤں بندھی ایک شخص کی لاش ملی،مقتول کی شناخت جاوید کے نام سے ہوئی، اورنگی ٹاوٴن سیکٹر گیارہ میں صابری چوک کے قریب نامعلوم دہشت گردوں نے ہوٹل پرفائرنگ سے سابق کونسلررشید اپنے بیٹےعادل سمیت جاں بحق ہوگئے۔

گلبہار قبرستان کے قریب سے ایک شخص کی تشددزدہ بوری بندلاش ملی،ملیرمیمن گوٹھ سے خاتون کی گولیاں لگی لاش ملی،کورنگی زمان ٹاوٴن سے رکشہ ڈرائیور جاویدکی لاش ملی، جسے تشددکے بعد گلےمیں پھندا ڈال کرقتل کیا گیا،منگھوپیرایم پی آر کالونی اور بلدیہ اتحاد ٹاؤن میں فائرنگ سے تین افراد زخمی ہوئے۔a

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں