site
stats
پاکستان

کراچی : 12 گھنٹے گزر گئے، بجلی بحال نہ ہوسکی، شہری پریشان

کراچی: بجلی کے بڑے بریک ڈاؤن سے کے الیکٹرک کی نااہلی پھر سامنےآگئی، کئی علاقوں میں 12گھنٹے سے بجلی کی فراہمی معطل ہے ، جس سے شہریوں کومشکلات کا سامنا ہے، شہریوں نے سحری اندھیرے میں کی، مساجد میں پانی ختم ہوگیا جبکہ پمپنگ اسٹیشنز بند ہونے کے باعث پانی کا بحران بھی شدت اختیارکرگیا ہے۔

کراچی میں کےالیکٹرک کی نااہلی سے شہر مکمل طور پراندھیرے میں ڈوب گیا، شہریوں نےتاریکی میں سحری کی، گزشتہ روزافطار سے پہلےہی شہر کے نصف حصے میں بجلی غائب ہوگئی ، ناظم آباد، لائنز ایریا، صدر، طارق روڈ، سبزی منڈی، اولڈ سٹی ایریا، کلفٹن، لالہ زار کالونی، ملیر، گلشن اقبال، گلستان جوہر، لیاری، کھارادر، گارڈن اور فیڈرل بی ایریا سمیت کئی علاقوں کی بجلی غائب ہونے سے شہریوں کوافطار اور نماز تراویح میں شدید پریشانی کا سامنا کرنا پڑا۔

رات دو بجے واپڈا اور حبکو کی ٹرانسمیشن لائن بھی ٹرپ ہوگئی اور پھر کے الیکٹرک کے تمام پاور پلانٹ بند ہوگئے، عوام کو سحری میں شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا، ذرائع کے مطابق کے الیکٹرک کے بن قاسم پاور پلانٹ میں خرابی کے باعث کئی یونٹس نے کام کرنا چھوڑ دیا، جس سے شہر کو سات سو میگاواٹ بجلی کی سپلائی معطل ہوگئی۔

کے الیکٹرک کے ترجمان نے بجلی کے بریک ڈاؤن کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ بن قاسم ٹاؤن پاور پلانٹس کے دو پاور پروجیکٹس فالٹ کی وجہ سے ٹرپ کر گئے، جن کی مرمت کا کام شروع کردیا گیا ہے اور شہر کو جلد بجلی فراہمی بحال کردی جائے گی۔

بجلی کے بریک ڈاؤن سے پانی فراہم کرنے والی باہتر انچ قطر کی پائپ لائن بھی پھٹ گئی، جس کے نتیجے شہر میں جاری پانی کا بحران شدت اختیار کرگیا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top