The news is by your side.

Advertisement

کوئٹہ فائرنگ پر وزیر اعظم کا نوٹس، حکومتی اور سیاسی حلقوں کی مزمت

کوئٹہ/لاہور/اسلام آباد: کوئٹہ کے علاقے ہزارہ گنجی میں دہشتگردی کے واقعے میں آٹھ افراد کی ہلاکت پر وزیراعلٰی پنجاب شہباز شریف، الطاف حسین، ڈاکٹر طاہرالقادری، شیریں رحمان اور وحدت المسلمین نے شدید الفاظ میں مذمت کی گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق: کوئٹہ کےعلاقےہزارہ گنجی میں مسافر بس پردہشتگردوں کی فائرنگ سے ہونے والی ہلاکتوں پرسیاسی اورمذہنی جماعتوں نےشدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔ وزیراعظم نواز شریف نے کوئٹہ فائرنگ کا نوٹس لیتے ہوئے سیکٹریری داخلہ کو سیکیورٹی ایجنسیوں کے ساتھ ملکر ملزمان کو گرفتارکر نے کی ہدایت دی ہیں۔

وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف نےفائرنگ سے قیمتی انسانی جانوں کےضیاع پراظہارافسوس اورسوگوارخاندانوں سےہمدردی اور اظہارتعزیت کی۔ شہبازشریف کاکہناتھاکہ معصوم لوگوں کونشانہ بنانے والےمسلمان توکیاانسان کہلانےکےبھی حقدارنہیں۔

ایم کیوایم کےقائد الطاف حسین نےبہیمانہ قتل کی کارروائی محرم الحرام سےقبل فرقہ وارانہ ہم آہنگی سبوتاژ کرنےکی گھناؤنی سازش کاحصہ قرار دیا۔ ڈاکٹر طاہرالقادری نے ہزارہ گنجی میں فائرنگ کی مذمت کرتےہوئےکہاکہ حکومت امن وامان کےقیام میں ناکام ہوچکی ہے۔

امیر جماعت اسلامی سراج الحق کہتے ہیں حکومت عوام کا تحفظ کرنے میں ناکام ہوچکی ہے۔ مجلس وحدت المسلمین نےبھی کوئٹہ فائرنگ کی شدیدمذمت کی۔ تحریک انصاف کی رہنماشیریں مزاری کہتی ہیں دن دیہاڑےمعصوم شہریوں کاقتل عام ظلم ہے۔ صوبائی حکومت ٹارگٹ کلنگ روکنےمیں ناکام ہوگئی ہے۔ انھوں نے مزید کہا کہ کوئٹہ ہزارہ گنجی گاڑی پر حملے کی شدید مذمت کرتے ہیں، قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے فائرنگ کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ملزمان کو فوری گرفتار کیا جائے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں