The news is by your side.

Advertisement

گلوکاراخلاق احمد کومداحوں سے بچھڑے15سال بیت گئے

خوبصورت آواز اور سریلا انداز والے گلوکار اخلاق احمد کی آج یاد آرہی ہے۔ سروں کی دنیا میں منفرد مقام رکھنے والے اخلاق احمد کی پندرھویں برسی آج  منائی جارہی ہے۔موسم حسین اورکسی کی یادآئے تو اخلاق احمد کا گانا۔ساون آئے ساون جائے ضرور سنا جائے۔سریلی اور مدھرآواز۔گیتوں میں ان کے مٹھاس تھی۔ گائیکی کی دنیا میں منفرد مقام رکھنے والے گلوکار اخلاق احمد۔۔نے جب بھی گایا خوب گایا۔

جب کسی کو مناناہو اورسنہرے خواب دکھانا ہو توایک ہی گانا یاد آتاہے ۔سونا نہ چاندی نہ کوئی محل جان من ۔فلمی دنیامیں طویل جدوجہد کے بعد محمد رفیع کے دیوانے اخلاق احمد کو جب موقع ملا تو قسمت نے ساتھ دیا۔اخلاق احمد نے فلم چاہت ،بندش ،آئینہ، دو ساتھی؛لیلیٰ مجنوں، صبح کا تارا، گھونگھٹ ، سنگم ، بلندی سمیت کل چھیاسی فلموں میں ایک سو سترہ گیت گائے گیت گائے۔

انھوں نے سب سے زیادہ گانے ناہید اختر اور نیرہ نور کے ساتھ گائے۔ انیس سو اٹھانوے میں فلم ’’نکاح ‘‘کے لیے ان کا گا یا ہوا گیت ’’یہ دل دیوانہ ہے ‘‘ ان کی زندگی کا آخری گیت ثابت ہوا۔کیسنر کے موذی مرض نے خوبصورت آوازکے مالک سے زندگی تو چھین لی مگر دلوں سے رابطہ نہ توڑ سکا۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں