گورنرسندھ نے سرکاری اسکول مسمارکرنیکا نوٹس لے لیا -
The news is by your side.

Advertisement

گورنرسندھ نے سرکاری اسکول مسمارکرنیکا نوٹس لے لیا

کراچی : شاہ فیصل کالونی میں واقع سرکاری اسکول کو مسمار کرکے گھر تعمیر کرنے کا گورنر سندھ نے نوٹس لے لیا۔ سرکاری اسکول پر چند ماہ قبل بھی قبضہ کیا گیا تھا۔

جس کی ایف آئی آر ڈائریکٹر عبدالوہاب عباسی نے کئی ماہ قبل درج کرائی تھی، دو افراد کو نامزد بھی کیا گیا تھا تاہم ان کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔

موسم سرما کی تعطیلات کے بعد جب دوبارہ اسکول کھلے تو اسکول کی عمارت مسمار ہوچکی تھی ، طلبہ و طالبات کھلے آسمان تلے پتھروں پر بیٹھے ہوئے تھے۔

گورنر سندھ ڈاکٹر عشرت العباد خان نے صورتحال کا نوٹس لیتے ہوئے شاہ فیصل کالونی مین واقع سرکاری اسکول کا تفصیلی معائنہ کیا ،گورنر سندھ کے ساتھ کمشنر کراچی اور دیگر افسران بھی موجود تھے۔

گورنر سندھ کاکہنا تھا کہ فوری طور پر اسکول سے قبضہ ختم کرایا جائے، اور اسکول کو فوری طور پر دوبارہ تعمیر کیا جائے گا۔

اسکول کے دورے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے گورنر سندھ ڈاکٹر عشرت العباد خان کاکہنا تھا کہ اسکول کی عمارت سے قبضہ ختم کرانے کے احکامات جاری کردیے ہیں ۔

کوشش ہوگی کہ کل سے ہی تعمیراتی کام کا آغازکردیا جائے، انہوں نے کہا کہ محکمہ ورکس ڈپارٹمنٹ کے مطابق ز مین محکمہ تعلیم کی ملکیت ہے۔تعطیلات کے دوران اسکول کی عمارت پر قبضہ کیا گیا ۔

گورنرسندھ کاکہنا تھا کہ سرکاری اسکول پر قبضہ ناقابل برداشت ہے، گورنر سندھ نے کہا کہ اگر کسی کو کوئی اعتراض تھا تو وہ عدالت سے رجوع کرتا تاہم یہ طریقہ غلط ہے کہ بچوں کو تعلیم سے محروم کردیا جائے۔

انہوں نے کہا کہ واقعے کی مکمل تحقیقات ہوگی اور اساتذہ کرام اس موجودہ ماحول میں بھی تدریس جاری کرنے کو تیار ہیں۔

واضح رہے کہ اے آروائی نیوز ساڑھے پانچ ماہ قبل اسکول پر قبضے کی نشاندھی کرچکا ہے ۔اے آروائی پر خبر نشر ہونے کے بعد ڈائریکٹر اسکولز عبدالوہاب عباسی نے قبضہ مافیا کے خلاف ایف آئی آر درج کرائی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں