The news is by your side.

Advertisement

گورنرپنجاب چوہدری سرورنے استعفیٰ دے دیا

لاہور: گورنر پنجاب چوہدری محمد سرورنے اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دیا، شام چار بجے نیوزکانفرنس میں استعفے کی وجوہات بتائیں گے۔

تفصیلات کے مطابق جمعرات کوپنجاب کے گورنرچوہدری محمد سرورنے پنجاب حکومت اوروفاقی حکومت سے اختلافات کے باعث استعفیٰ  دیا۔چوہدری سرور تقریباً سترہ ماہ تک گورنر پنجاب کے عہدے پرفائزرہے۔

گزشتہ کئی مہینوں سے گورنرپنجاب اورحکومت کے درمیان چپقلش کی خبریں گردش کررہی تھیں اورپاکستان عوامی تحریک اورپاکستان تحریکِ انصاف کے دھرنے کے دوران یہ خبریں زورپکڑگئی تھیں۔

گورنر پنجاب مختلف مواقع پروفاقی اورصوبائی حکومت کو ناقص کارکردگی کی بنا پرتنقید کا نشانہ بناتے رہے ہیں۔

گورنر پنجاب اورحکومت کے درمیان اختلافات کی خبریں پہلی بارلندن میں اے آروائی نیوزکے اینکرپرسن عامرغوری کو دیے گئے خصوصی انٹرویو میں حکومت پرتنقید کے بعد منظرِعام پرآنا شروع ہوئیں۔

دوروزقبل چوہدری محمد سرورنےامریکی صدرباراک اوبامہ کے دورہ بھارت پرحکومتی خارجہ پالیسی پرشدید تنقید کی تھی اورملٹری کورٹس کے معاملےمیں بھی حکومت کو آڑے ہاتھوں لیا تھا۔

اے آروائی نیوزکے سینئراینکرپرسن مبشر لقمان نے اپنے ذرائع کے حوالے سے انکشاف کیاہے کہ مخدوم احمد محمود جوکہ چوہدری محمد سرور سے قبل پنجاب کے گورنر تھے انہیں دوبارہ گورنرمنتخب کرنے پرغورکیا جارہا ہے۔

چوہدری محمد سرورکو 2 اگست 2013 کو نوازشریف نے گورنرپنجاب منتخب کیا تھا۔

چوہدری سرورتین بار گلاسگو سے برطانوی پارلیمان کے رکن منتخب ہوئےاور13 سال گلاسگو مرکزکی لیبر پارٹی کی طرف سے نمائندگی کی، وہ برطانیہ کے پہلے مسلم پارلیمینٹیرن ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں