ہیومن رائٹس کمیشن کا بلوچستان میں فرقہ وارانہ، لسانی قتل و غارت پراظہارِتشویش -
The news is by your side.

Advertisement

ہیومن رائٹس کمیشن کا بلوچستان میں فرقہ وارانہ، لسانی قتل و غارت پراظہارِتشویش

لاہور: ہیومن رائٹس کمیشن پاکستان نے بلوچستان میں بڑھتے ہوئے لسانی اورفرقہ وارانہ تشدد کے واقعات پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے ان واقعات کے روک تھام اور زمہ داروں کو قرار واقعی سزا دینے کا مطالبہ کیا ہے۔

ہیومن رائٹس کمیشن آف پاکستان کی جانب سے جاری کردہ اعلامیے میں ایچ آر سی پی کی جانب سے بلوچستان میں بڑھتے ہوئے لسانی اور فرقہ وارانہ تشدد پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اسے خطرے کی گھنٹی قراردیا ہے۔

واضح رہے کہ فرقہ وارانہ قتل و غارت کے حالیہ واقعے میں بلوچستان میں دہشت گردی کا شکار ہزارہ برادری سےتعلق رکھنے والے دو بھائیوں کو کوئٹہ میں پاسپورٹ آفس کے باہر قتل کردیا گیا۔

دوسری جانب صوبہ پنجاب کے شہرخانیوال سے تعلق رکھنے والے تین مزدوروں کو بھی بلوچستان کے علاقے پسنی میں موت کے گھاٹ اتاردیا گیا تھا۔

ہیومن رائٹس کمیشن آف پاکستان کی جانب سے اس نقطہ نظر کا اظہار کیا گیا ہے کہ بلوچستان میں فرقہ ورانہ اور لسانی تشدد میں ملوث افراد بلوچست کی کسی قسم کی خدمت نہیں کررہے۔

ہیومن رائٹس کمیشن آف پاکستان نے سول سوسائٹی ، مذہبی اور سیاسی جماعتوں سے بھی اپیل کی ہے کہ بلوچستان کو تشدد کی اس لہر سے نکالنے کے لئے صرف مذمتی بیانات کافی نہیں ہیں بلکہ عملی اقدامات کی اشد ضرورت ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں