The news is by your side.

Advertisement

یمن میں سعودی آپریشن کی حمایت کرتے ہیں، آصف علی زرداری

اسلام آباد : سینیٹر رحمان ملک نے کہا ہے کہ پیپلزپارٹی یمن میں سعودی آپریشن کی حمایت کرتی ہے،پیپلزپارٹی مشکل وقت میں سعودیہ عرب کے ساتھ ہے،سعودیہ عرب میں مقدس مقامات پر آنچ نہیں آنے دیں گے۔

اپنی رہائش گاہ پر پریس کانفرنس کے دوران سینیٹر رحمان ملک نے آصف علی زرداری کی ہدایت پرمسئلہ یمن کے حوالے سے پارٹی پالیسی کو واضح کرتے ہوئے کہا کہ سعودی عرب میں مسلمانوں کے مقدس مقامات پر حملے یا بری نظر سے دیکھنے کی اجازت نہیں دے سکتے۔

پیپلزپارٹی کا کسی ایک ملک کی طرف جھکاؤ کا تاثر غلط ہے ،او آئی سی یمن کے مسئلے کا حل اور وہاں جمہوری نظام کو بچانے میں اپنا کردار ادا کرے، اگر آصف علی زرداری کو مسئلہ یمن کے حل کیلئے کوئی ذمہ داری دی گئی تو وہ اپنا بھرپور کردار ادا کریں گے ۔

پیپلزپارٹی ماضی میں بھی عالمی امن اور خصوصاً مسلم اُمہ کے تحفظ کیلئے کردار ادا کرچکی ہے ،رحمان ملک کا کہنا تھا کہ ماضی میں بھی ایران اور سعودیہ میں کشیدگی ختم کرانے کیلئے اپنا کردارا دا کیا ،ماضی میں عراق پر حملے کے وقت بھی مغرب اور صدام حسین نے ثالثی کا کردار ادا کیا ۔

انہوں نے کہا کہ فوج کو سعودیہ عرب بھیجنے کے حوالے سے جب وزیر اعظم پوچھیں گے تو رائے دیں گے ،داعش ایک حقیقت ہے جو مشرق وسطیٰ کی القاعدہ بنے گی داعش کا اثر پاکستان میں بھی موجود ہے۔

قائد حزب اختلاف خورشید شاہ کا کہناہے کہ سعودی عرب کی سالمیت کوکوئی خطرہ ہے توپاکستان کومدد کرنی چاہیئے۔ سکھر میں میڈیا سےگفتگو میں ان کا کہنا تھاکہ کسی ملک کےاندرونی معاملات پروزیراعظم نواز شریف پارلیمنٹ کواعتماد میں لیں ۔

علاوہ ازیں دیگر سیاسی جماعتوں کے قائدین نے بھی یمن صرتحال پر اپنے خیالات کا اظہار کیاہے،جمیعت علمائے پاکستان کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے پیر پگارا سے ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ مسلمانوں کو تقسیم کرنا امریکی ایجنڈا ہے۔یمن کی صورتحال پر سیاسی مشاورت سے راستہ نکالنا چاہئے۔

امیر جماعت اسلامی سراج الحق کا کہنا ہے کہ خلیج میں برپا جنگ کا فائدہ امریکا اور اسرائیل کو ہوگا ۔پاکستانی حکمرانوں سے اپیل ہے کہ آگ پر پانی ڈالنے کی کوشش کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں