The news is by your side.

Advertisement

اپریل کی پہلی دہائی، مہنگا ئی کی شرح میں 0.30 فیصد اضافہ

اسلام آباد: ادارہ برائے شماریات پاکستان( پی بی ایس) کا کہنا ہے کہ مالی سال 2018-19ء کے دسویں ماہ (اپریل 2019ء) کی پہلی دہائی میں مہنگائی کی شرح میں 0.30 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق وزیر خزانہ اسد عمر کی وزارت خزانہ چھوڑنے سے متعلق مصدقہ اطلاعات کے بعد پاکستان اسٹاک ایکسچینج 100 انڈیکس میں 145 پوائنٹس کی کمی واقع ہوئی ہے۔

ادارہ شماریات کا کہنا ہے کہ کم آمدنی والے طبقے کے لیے قیمتوں کے حساس اشاریئے میں 0.35 فیصد اضافہ ریکار ڈ کیا گیا، 11 اپریل کو ختم ہونے والے ہفتے کے دوران ٹماٹر، پیاز ،لہسن ،آلو،کیلے، دال مونگ، دال ماش، دال مسور ،زندہ مرغی، چینی ،خوردنی تیل، بیف، مٹن، مسٹرڈ آئل، ملک پاؤڈر، تازہ دودھ، دھی، نمک، اری چاول، ویجی ٹیبل گھی، سمیت 23 اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں اضافہ ہوا۔

علاوہ ازیں ایل پی جی، گڑ،انڈے، سرخ مرچ، چنے کی دال، گندم، آٹا ،سمیت 8 اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں کمی ریکارڈ کی گئی۔

ادارہ شماریات کے مطابق پیٹرول، ہائی سپیڈ ڈیزل، مٹی کاتیل، گیس نرخ، بجلی کے نرخ، چائے، روٹی سادہ، باسمتی چاول، سگریٹ، صابن ، سمیت 22 اشیائے کی قیمتوں میں استحکام رہا۔

اسد عمر کے استعفے کے بعد اسٹاک مارکیٹ میں مندی

گزشتہ ہفتہ کے مقابلے میں آٹھ ہزار تا بارہ ہزار آمدنی، بارہ ہزار تا اٹھارہ ہزارآمدنی، اٹھارہ ہزار تا پینتیس ہزار تک اور پینتیس ہزار روپے سے زائد آمدنی والے افراد کے گروپوں کیلئے قیمتوں کے حساس اعشاریے میں بالترتیب 0.33، 0.33 ،0.31 اور 0.27 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں