The news is by your side.

سیف سٹی چالان سے متعلق عدالت کا بڑا فیصلہ

لاہور ہائی کورٹ نے سیف سٹی چالان سے متعلق دائر درخواست پر فیصلہ سنادیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائیکورٹ کےجسٹس طارق سلیم شیخ نے سیف سٹی چالان کوغیر قانونی قرار دے دیا ہے، عدالت نے سیف سٹی ای ٹکٹنگ چالان کی خلاف تمام درخواستیں سماعت کے لئے منظور کرلی ہیں۔

عدالتی فیصلے میں کہا گیا کہ کابینہ کی منظوری کے بغیر کیمروں سے ای چالان نہیں کیا جاسکتا۔

اس سے قبل مارچ میں ہونے والی سماعت کے موقع پر لاہور ہائی کورٹ نے سیف سٹی کیمروں سے کیے جانے والے ای چالان پر سوالات اٹھاتے ہوئے استفسار کیا تھا کہ قانون بنا نہیں تو اتھارٹی ای چالان کس طرح کررہی ہے؟

یہ بھی پڑھیں: قانون کے بغیر سیف سٹی اتھارٹی ای چالان کیسے کررہی ہے؟ لاہور ہائیکورٹ

لاہور ہائی کورٹ کا کہنا تھا کہ ٹریفک قوانین کی خلاف ورزی پرگاڑی کو کیسے بند کیا جاسکتا ہے؟ ڈرائیور کےجرم کی سزا گاڑی کے مالک کو کیسےدی جاسکتی ہے،؟ عدالت کا مزید کہنا تھا کہ قانون سازی کے بغیر اس طرح کےاقدامات غیر قانونی ہیں۔

واضح رہے کہ سیف سٹی اتھارٹی نے ٹریفک سگنلز پر کیمرے اور سنسرز لگا رکھے ہیں، جن سے ٹریفک قوانین کی خلاف ورزی پر خودبخود چالان ہو جاتا ہے اور چالان گاڑی مالک کے گھر پہنچ جاتا ہے۔

شہریوں کو شکایت تھی کہ لاہور میں ایک گاڑی کے سیکڑوں چالان کیےجاتے ہیں، اور اس نظام کے تحت زمینی حقائق کو مدنظر نہیں رکھا جاتا اور جرمانہ ہوجاتا ہے، جن کے درجنوں چالان ہوگئے ہیں اور جرمانے ادا نہیں کیے گئے آئے روز ٹریفک پولیس ایسی گاڑیوں کی پکڑ دھکڑ کرتی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں