The news is by your side.

Advertisement

حکومت امریکا سے ڈرتی ہیں، اس لئے روس سے معاہدے نہیں کررہی، سابق وزیر خزانہ

اسلام آباد: سابق وزیرخزانہ شوکت ترین کا کہنا ہے کہ اب ہمیں آئی ایم ایف کے سامنے کھڑا ہونا پڑے گا، یہ معاہدے عوامی مفاد کے لئے نہیں ہیں۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں نیوز کانفرنس کرتے ہوئے سابق وزیرخزانہ شوکت ترین نے کہا کہ ہماری حکومت نے آئی ایم ایف کو واضح جواب دے دیا تھا کہ کسی صورت پٹرولیم مصنوعات اور بجلی پر پیسے نہیں بڑھائیں گے بلکہ ٹیکس بیس بڑھا کر پیسے پورے کردیں گے۔

شوکت ترین نے کہا کہ موجودہ حکومت نے آئی ایم ایف سے جو معاہدے کئے وہ عوامی مفاد کے لئے نہیں ہے، اس لئے ہمیں آئی ایم ایف کے سامنے کھڑا ہونا پڑے گا مگر صورت حال یہ ہے کہ یہ تو آئی ایم ایف کے سامنے لیٹ گئے۔

یہ بھی پڑھیں: موڈیز نے 5 پاکستانی بینکوں کے آؤٹ لک کو منفی کردیا

نیوز کانفرنس میں سابق وزیر خزانہ نے الزام عائد کیا کہ موجودہ حکومت کی معاشی ٹیم نےہمارے دور کےنمبر جاری کیے، ہمیں کہا گیا کہ معاشی ترقی نہیں ہورہی، اب تسلیم کررہےہیں۔

شوکت ترین نے کہا کہ ہماری کسان برادری میں پیسےگئے اور خوشحالی ہوئی کیونکہ انڈسٹری گروتھ کرنےسےمزدور خوشحال ہوتا ہے، انہوں نے بتایا کہ ہم نےگیس پرسوا2روپے بڑھائےتھے، امپورٹڈ حکومت نے ایک ہی جھٹکےمیں ساڑھے7روپے بڑھادیئے۔

روس سے پیٹرول خریدنے سے متعلق سوال پر سابق وزیر خزانہ کا کہنا تھا کہ روس سے تیل خریدنے پر جب بھارت اور چین پر کوئی پابندی نہیں لگی تو ہم پر کیوں لگے گی؟ یہ لوگ روس اسلئے نہیں جارہے کیونکہ یہ امریکا سے ڈرتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں