The news is by your side.

Advertisement

بیوی کے روٹھنے پر 103 سالہ شخص کا انوکھا اقدام

عراق میں 103 سالہ شخص نے دوسری بیوی کے روٹھنے پر تیسری شادی کرلی جس میں بزرگ دولہا کے بچوں اور پوتے پوتیوں نے بھی شرکت کی۔

"عمر 55 کی دل بچپن کا” یا "عمر سے کچھ نہیں ہوتا بس دل جوان ہونا چاہیے” یہ مقولے تو اکثر لوگوں نے سن رکھے ہوں گے لیکن عراق میں ایسا کچھ ہوا ہے جس پر یہ مقولہ صادق آتا ہے کہ عمر سے کچھ نہیں ہوتا بس دل جوان ہونا چاہیے۔

عراق میں زندگی کی سنچری مکمل کرنے والے 103 سالہ بزرگ نے زندگی کی نئی اننگ شروع کردی ہے، ان کی تیسری دلہن کی عمر صرف 37 برس ہے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق عراق کی جنوبی کمشنری الدیوانیہ میں 103 سالہ عراقی شہری مخیلف فرہود المنصوری نے اپنی عمر سے 66 برس چھوٹی خاتون سے تیسری شادی رچالی لی اور وجہ بھی حیران کن کہ ان کی دوسری بیوی ان سے روٹھ کر میکے چلی گئیں، بزرگ کی شادی میں ان کے بیٹوں، پوتے، پوتیوں اور پڑوسیوں نے شرکت کی۔

اس حوالے سے مخیلف فرہود المنصوری کے بیٹے عبدالسلام نے بتایا کہ ’ان کے والد کی یہ تیسری شادی ہے۔ ان کے والد 1919 میں پیدا ہوئے اور ان کی پہلی اہلیہ کا انتقال 1999 میں ہوا جس کے بعد انہوں نے دوسری شادی کی جس سے ان کی اولاد بھی ہوئی۔

عبدالسلام نے اپنے والد کی شادی کی وجہ بتاتے ہوئے کہا کہ چند ماہ قبل ان کے والد کا اپنی بیگم سے جھگڑا ہوگیا تھا جس پر وہ ناراض ہو کر اپنے میکے چلی گئیں۔ کئی ماہ سے بلانے کے باوجود واپس نہیں آئیں تو مجبوراً ہمارے والد نے خواہش ظاہر کی کہ وہ شادی کرنا چاہتے ہیں اور اب ہم نے ان کی خواہش پوری کر دی گئی ہے۔

عبدالسلام نے انکشاف کیا کہ ان کی سوتیلی والدہ کی تاریخ پیدائش 1985 ہے۔ پہلے منگنی کی گئی اس کے بعد مہندی کی رسم ہوئی اور پھر باقاعدہ شادی کی تقریب منعقد کی گئی۔ رخصتی کی تقریب میں دولہا کے بیٹوں اور پوتے پوتیوں نے شرکت کی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں