The news is by your side.

Advertisement

کرونا وائرس، جنگ سے متاثرہ شہر غزہ میں 13 سالہ بچی ٹیچر بن گئی

غزہ: کرونا وائرس نے 13 سالہ بچی ٹیچر بن گئی، غزہ کے علاقے میں ننھی استاد محلے کے بچوں کی کلاسز لینے لگی۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق کرونا وائرس کی وجہ سے اسکول بند ہیں لیکن جنگ سے متاثرہ شہر غزہ میں 13 سالہ ننھی ٹیچر بچوں کو اسکول پڑھانے لگی۔

ننھی فجر ٹوٹے پھوٹے در و دیوار پر انگلش اور ریاضی پڑھاتی ہیں اور بچوں کی پینٹنگز کے لیے پوسٹرز کی چسپاں بھی کردئیے گئے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق فلسطینی محاصرہ علاقے میں 20 افراد کرونا وائرس میں مبتلا ہیں جہاں اسرائیل اور مصر کی سرحدوں سے ٹریفک طویل عرصے سے محدود ہے اور حالیہ مہینوں میں غزہ میں داخل ہونے والے افراد کی کورنٹائن ہوگئے ہیں۔

فجر حمید جو ایک دن پروفیشنل ٹیچر بننے کے لیے پرامید ہیں اس کلاس کو انگریزی، عربی اور ریاضی کا سبق پڑھاتی ہیں، انہوں نے اسکول چار طالب علموں سے شروع کیا جو اب بڑھ کر 15 ہوگئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ میں بچوں کو یہاں لانا چاہتی تھی، انہیں تعلیم دینا چاہتی تھی اور یہی میری صلاحیت ہے۔ علاوہ ازیں کرونا وائرس کے سبب غزہ کے اساتذہ بھی آن لائن تعلیم دے رہے ہیں۔

فجر کے والد بندر حمید کا کہنا ہے کہ ان کی بیٹی نے جو کردار ادا کیا ہے اس سے انہیں اپنی بیٹی پر فخر ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں