The news is by your side.

Advertisement

روس کے ہاتھوں ‘کرائے کے فوجی’ قتل، تعلق کس ملک سے تھا؟

خارکوف: روسی فوج نے دعویٰ کیا ہے کہ خارکوف میں یوکرین جنگ میں حصہ لینے والے پولینڈ کے فوجیوں کو قتل کردیا گیا ہے۔

غیر ملکی میڈیا رپورٹ کے مطابق روسی وزارت دفاع کے سرکاری نمائندے میجر جنرل ایگور کوناشینکوف نے ایک بیان میں کہا کہ خارکوف کے علاقے آئزمسیکے میں خفیہ آپریشن کے دوران پولینڈ کے تیس فوجیوں کو قتل کردیا گیا ہے جو کہ خفیہ طور پر یوکرین فوجیوں کے ساتھ مل کر روس کے خلاف جنگ میں مصروف تھے۔

روسی وزارت دفاع کے نمائندے کا کہنا تھا کہ یوکرین کی 221 ویں فوجی تنصیب کو بھی شکست دی گئی جبکہ توپ خانے کی مدد سے دشمن کی افرادی قوت کے علاقوں سمیت بارہ مقامات کو تباہ کردیا گیا، اس کے علاوہ یوکرائنی فضائیہ کا ایک لڑاکا طیارہ اور ایک ہیلی کاپٹر کو گورودنیا کے علاقے میں طیارہ شکن میزائل سسٹم کے ذریعے مار گرایا گیا۔

ایک روز قبل روسی فوجی جنرل کا کہنا تھا کہ روسی آپریشنل ٹیکٹیکل ایوی ایشن نے ایک دن میں یوکرین کی اڑتالیس فوجی تنصیبات کو نشانہ بنایا، جن میں دو کمانڈ پوسٹیں، ایک ریڈار اسٹیشن، ایک سے زیادہ لانچ راکٹ سسٹم کی دو پوزیشنیں، ایک توپ خانے کی بیٹری، اور راکٹ کے چھ گودام شامل ہیں۔

اس سے قبل آٹھ اپریل کو اوڈیسا کے شمال مشرق میں باسشن ساحلی کمپلیکس سے روسی میزائلوں نے غیر ملکی کرائے کے فوجیوں کو جمع کرنے اور تربیت دینے کے مرکز کو تباہ کر دیا، اس کے علاوہ یوکرائنی فوجیوں کے پہنچنے والے ذخائر کے ہتھیار اور سازوسامان کو ختم کردیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں