The news is by your side.

Advertisement

روسی ویکسین کی افادیت تسلیم

نئی دہلی: بھارت نے کرونا وبا کے خلاف جنگ میں حکمت عملی کو تبدیل کرتے ہوئے بڑا فیصلہ کیا ہے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق ڈرگ کنٹرولر جنرل آف انڈیا (ڈی سی جی آئی) نے روسی ویکسین ‘ اسپونتک لائٹ’ کے تیسرے مرحلے کے بریجنگ ٹرائل کی منظوری دے دی ہے۔

میڈیکل جرنل ’دی لیسینٹ‘ میں شائع حالیہ تحقیق کے بعد یہ منظوری سامنے آئی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ اسپوتنک لائٹ نے کووڈ نائنٹین کے خلاف 78.6 سے 83.7 فیصد اثر دکھایا ہے جو کہ بیشتر دو خوراک والے ٹیکوں کے مقابلے میں کافی زیادہ ہے۔

اس سے قبل جولائی میں سی ڈی ایس سی او کی سجیکٹ ماہر کمیٹی نے ملک بھر میں روسی ویکسین کے تیسرے مرحلہ کی ٹیسٹنگ کی ضرورت کو خارج کرتے ہوئے اسپوتنک-لائٹ کو ایمرجنسی استعمال کے لیے اتھارٹی دینے سے انکار کر دیا تھا۔

کمیٹی نے نوٹ کیا کہ اسپوتنک-لائٹ اسپوتنک-وی کے عنصر یکساں تھے اور ہندوستانی آبادی میں اس کی سیکیورٹی اور امیونیوجینسٹی ڈیٹا پہلے سے ہی ایک ٹیسٹنگ میں تیار کیا گیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: روس نے اسپوتنک ویکسین کے سنگل ڈوز کی منظوری بھی دے دی

حالیہ تحقیق میں ارجنٹائن میں کم از کم 40 ہزار بزرگوں کو شامل کیا گیا، جس میں کہا گیا کہ اسپوتنک لائٹ نے ٹارگٹڈ آبادی کے درمیان اسپتال میں داخل ہونے کی تعداد کو 82.1 فیصد سے 87.6 فیصد تک کم کیا۔

روسی ڈائریکٹ انویسٹمنٹ فنڈ (آر ڈی آئی ایف) نے گزشتہ سال ہندوستان میں اسپوتنک-وی ویکسین کے تیسرے مرحلہ کے ٹرائل کے لیے ڈاکٹر ریڈیز لیباریٹریز کے ساتھ شراکت داری کی تھی، اپریل میں اسپوتنک-وی کو ہندوستان میں ایک ایمرجنسی استعمال کی اتھارٹی حاصل ہوئی تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں