The news is by your side.

Advertisement

شیریں مزاری کی گرفتاری، انکوائری کمیشن کے ٹی او آر سامنے آگئے

اسلام آباد ہائی کورٹ نے ڈاکٹر شیریں مزاری کی گرفتاری کی تحقیقات کے لیے انکوائری کمیشن تشکیل دینے کا حکم دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق تین رکنی کمیشن کے سربراہ سابق سیکرٹری قانون جسٹس (ر)شکور پراچہ ہوں گے، کمیشن میں سابق آئی جی پی ڈاکٹر نعیم خان، سابق فیڈرل سیکریٹری سیف اللہ چٹھہ شامل ہیں۔

آج دوران سماعت کابینہ ڈویژن کا جاری کردہ نوٹیفکیشن اسلام آباد ہائیکورٹ میں پیش کیا گیا، جس میں کمیشن کے ٹی او آر عدالت کے سامنے پیش کئے گئے، ٹی او آر میں بتایا گیا کہ کمیشن شیریں مزاری کی گرفتاری سے متعلق تحقیقات کرے گا۔

کمیشن غیر جانبدارانہ انکوائری سےگرفتاری میں اختیارات کےغلط استعمال کےالزامات کاجائزہ لے گا، کمیشن چار جولائی تک اپنی سفارشات وفاقی کابینہ کو بھیجے گا، ٹی او آر میں واضح طور پر کہا گیا کہ اسلام آباد انتظامیہ کمیشن کو سیکرٹریٹ سپورٹ فراہم کرے گی۔

یہ بھی پڑھیں: شیریں مزاری کی گرفتاری پر اینٹی کرپشن کا موقف سامنے آگیا

واضح رہے کہ سابق وفاقی وزیر شیریں مزاری کو گزشتہ ماہ 21 مئی کو ان کے گھر کے باہر سے پولیس نے گرفتار کیا تھا۔

اسلام آباد ہائیکورٹ نے شیریں مزاری کی گرفتاری کا ازخود نوٹس لیتے ہوئے انہیں اسی رات گیارہ بجے عدالت میں پیش کرنے کا حکم دیا تھا۔

بعد ازاں چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ اطہرمن اللہ نے پاکستان تحریک انصاف کی رہنما ڈاکٹر شیریں مزاری کی گرفتاری کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے انہیں فوری رہا کرنے کا حکم دے دیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں