The news is by your side.

Advertisement

کراچی: کم عمر مبینہ چور تشدد سے ہلاک، 2 افراد گرفتار، وزیر اعلیٰ کا نوٹس

کراچی: پولیس نے شہر قائد کے علاقے کوکن سوسائٹی میں 15 سال کے کم عمر مبینہ چور کی تشدد سے موت کے واقعے میں ملوث 2 افراد کو گرفتار کر لیا ہے۔ وزیر اعلیٰ سندھ نے بھی لڑکے کی مبینہ ہلاکت کا نوٹس لے لیا۔

تفصیلات کے مطابق کراچی کے علاقے کوکن کو آپریٹو سوسائٹی میں ایک کم عمر چور موقع پر پکڑا گیا تھا جس پر لوگوں نے بے پناہ تشدد کیا جس کے باعث وہ ہلاک ہو گیا۔ لڑکے کی شناخت ریحان کے نام سے ہوئی ہے۔

پوسٹ مارٹم رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ لڑکے کی موت سر پر چوٹ لگنے سے ہوئی، اہل خانہ کا کہنا ہے کہ ریحان قصائی کا کام کرتا تھا، رات سے گھر نہیں آیا، آج اس کی ہلاکت کی خبر ملی۔

دوسری طرف پولیس کے مطابق ملزمان نے بیان دیا ہے کہ صبح 11 بجے لڑکا اپنے ساتھی کے ساتھ بنگلے میں داخل ہوا، ایک لڑکے کو ہم نے پکڑ لیا جب کہ دوسرا فرار ہو گیا۔

یہ بھی پڑھیں:  کراچی: لیاقت آباد میں ڈمپرکی ٹکرسے 8 سالہ انمول جاں بحق

ملزمان کے بیان کے مطابق موقع پر موجود لوگوں نے مل کر مبینہ چور لڑکے کو تشدد کا نشانہ بنایا، تشدد کے باعث لڑکے کی حالت غیر ہوئی تو رینجرز کو طلب کیا گیا، رینجرز اہل کاروں نے لڑکے کو چھڑایا لیکن اسپتال منتقل کرنے سے قبل ہی اس نے دم توڑا۔

ادھر وزیر اعلیٰ سندھ نے چوری کے الزام میں لڑکے کی مبینہ ہلاکت کا نوٹس لے لیا ہے، وزیر اعلیٰ نے قاتلوں کے خلاف سخت کارروائی کی ہدایت کی۔ انھوں نے کہا کہ یہاں جنگل کا قانون نہیں کہ خود ہی کارروائی کریں، انسانیت کی جو قدر نہیں کرے گا وہ انسان کہلانے کے لایق نہیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ لڑکے پر تشدد کرنے والے دو افراد کو حراست میں لے لیا گیا ہے جب کہ دیگر افراد کی تلاش جا ری ہے۔

موقع واردات کی ایک ویڈیو بھی بنائی گئی ہے، ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ لوگ لڑکے پر تشدد کر رہے ہیں، لڑکے کے ہاتھ گرل سے باندھے گئے تھے۔

خیال رہے کہ آج شہر قائد کے علاقے لیاقت آباد میں تیز رفتار ڈمپر کی زد میں آ کر آٹھ سالہ بچی انمول جاں بحق ہو گئی تھی، علاقہ مکینوں نے ڈمپر ڈرائیور کو پکڑ کر پولیس کے حوالے کر دیا تھا۔

اس حادثے میں بچی کے والدین خوش قسمتی سے محفوظ رہے تھے، حادثے کے فوری بعد علاقہ مکینوں کی بڑی تعداد نے ڈمپر ڈرائیور کو پکڑ لیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں