The news is by your side.

Advertisement

بھارت: کرپشن کا الزام ثابت، 20 اراکین اسمبلی نااہل

نئی دہلی: بھارتی الیکشن کمیشن نے سرکاری خزانے سے فائدہ اٹھانے  اور کرپشن کا الزام ثابت ہونے پر 20 اراکین پارلیمٹ (ایم ایل ایز) کو نااہل قرار دے دیا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق الیکشن کمیشن کی جانب سے نااہل قرار دیے جانے والے اراکین کا تعلق عام آدمی پارٹی سے ہے، مذکورہ ایم ایل ایز پر الزام تھا کہ انہوں نے سرکاری خزانے سے فائدہ اٹھایا۔

عام آدمی پارٹی کے اراکین پر یہ بھی الزام تھا کہ انہوں نے منافع بخش محکموں کے عہدے اپنے پاس رکھے اور وہاں سے حاصل ہونے والی آمدنی کو ذاتی مفادات کے لیے استعمال کیا۔

بھارتی الیکشن کمیشن نے غبن میں ملوث تمام ہی اراکین کو نااہل قرار دیتے ہوئے تحریری فیصلہ جاری کی جس کو توثیق کرنے کے لیے کاپی صدر کو بھی ارسال کی گئی ہے۔

سیاسی تجزیہ نگاروں کا کہنا ہے کہ اگر بھارتی صدر نااہل قرار دینے والے فیصلے کی توثیق کرتے ہیں تو پھر دہلی کی 20 نشتوں پر ضمنی انتخابات منعقد کیے جائیں گے۔

دوسری جانب عام آدمی پارٹی کے ترجمان نے فیصلہ ہائی کورٹ میں چیلنج کرنے کا اعلان کرتے ہوئے دعویٰ کیا کہ ’مخالفین کی ایما پر الیکشن کمیشن نے غیر منصفانہ فیصلہ جاری کیا‘۔

حکمران جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی کے رہنمامنوج تیواری نے فیصلے کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’الیکشن کمیشن کی جانب سے آنے والا فیصلہ اس بات کی غمازی ہے کہ بھارت میں کرپشن کے خلاف سخت اقدامات کیے جارہے ہیں‘۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں