تھر میں غذائی قلت، رواں ماہ 24 بچے دم توڑ گئے -
The news is by your side.

Advertisement

تھر میں غذائی قلت، رواں ماہ 24 بچے دم توڑ گئے

مٹھی: سندھ کے صحرائی علاقے تھر میں ننھی جانیں مٹی میں مل رہی ہیں۔ غذائی قلت سے ایک اور بچہ دم توڑ گیا جس کے بعد رواں ماہ ہلاکتوں کی تعداد 24 ہوگئی۔

تفصیلات کے مطابق صوبہ سندھ کے صحرائی علاقے تھر میں غذائی قلت عروج پر ہے۔ سول اسپتال مٹھی میں رواں ماہ 24 بچے غذا کی کمی کے باعث ہلاک ہوگئے۔

اسپتال ذرائع کے مطابق اب تک 488 بچے لقمہ اجل بن چکے ہیں۔ حکومت نے تھر میں 300 صحت مراکز بنائے ہیں لیکن ان میں سے صرف 14 فعال ہیں۔

مٹھی سمیت چار تحصیل اسپتالوں میں ادویات کی قلت بھی اموات میں اضافے کا سبب بن رہی ہے۔

کچھ عرصہ قبل ایک تنظیم کی جانب سے پیش کیے جانے والے تحقیقاتی ڈیٹا کے مطابق پاکستان میں بچوں کی بڑی تعداد مناسب غذا سے محروم ہے۔ تحقیق کے مطابق سندھ میں نقص نمو اور غذائیت کی کمی کا شکار بچوں کی تعداد 70.8 فیصد ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں