ڈھائی کروڑ پاکستانی کھلے آسمان تلے رفع حاجت پر مجبورہیں، اقوام متحدہ -
The news is by your side.

Advertisement

ڈھائی کروڑ پاکستانی کھلے آسمان تلے رفع حاجت پر مجبورہیں، اقوام متحدہ

اسلام آباد: پاکستان میں ڈھائی کروڑافراد حفظانِ صحت کی بنیادی سہولیات سے محروم ہیں اور کھلے آسمان تلے رفع حاجت پرمجبورہیں، یہ تناسب کل آبادی کا 13 فیصد بنتا ہے جو کہ بہت زیادہ ہے۔

اقوام متحدہ نے بیت الخلا کے عالمی دن پر ایک رپورٹ شائع کی جس میں یہ اعدادوشمار جاری کئے گئے ہیں، رپورٹ کے مطابق پانچ سال سے کم عمر 110 بچے روزانہ ڈائیریا اور آلودہ پانی کے سبب جاں بحق ہوجاتے ہیں،جبکہ 43 فیصد بچوں کو بھرپورنشونما نہیں مل پاتی۔

پاکستان میں بچوں کی صحت کے حوالے سے سرگرداں اقوام متحدہ کی ذیلی تنظٰیم یونیسیف کی ترجمان انجیلا کیرنے کا کہنا ہے کہ ’’ہم پاکستان کے مستقبل کا اس طرح سے ضیاع ہرگز برداشت نہیں کرسکتے‘‘۔

صحت وصفائی کا ناقص معیاراوررفع حاجت کے لئے مناسب جگہ کا نہ ہونا یہ دونوں عوامل مل کر ڈائیریا اور آنتوں کی بیماریوں کا سبب بن رہے ہیں جس کی وجہ سے بچوں کی بھرپور نشونما نہیں ہو پاتی۔

واضح رہے کہ بیت الخلا تک رسائی نہ ہونے کے سبب دنیا میں کروڑوں بچوں پر موت کے سائے منڈلاتے رہتے ہیں۔

دنیا میں لگ بھگ دوارب افراد بیت الخلا کی سہولت سے محروم ہیں یعنی کہ ہرآٹھ میں سے ایک شخص بیت الخلا کی سہولیات سے استفادہ نہیں کرسکتا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں