The news is by your side.

Advertisement

چھٹی حِس کیسے کام کرتی ہے؟

چھٹی حس دراصل حواس خمسہ سے ہٹ کر واقعات کو دور سے سمجھنے کی صلاحیت ہے، یہ حس ہمیں بعض جذبات سے متعلق بھی معلومات فراہم اور خبردار کرتی ہے۔

تاہم اب چھٹی حس سے متعلق نئی تحقیق سامنے آگئی ہے۔

سیدتی ویب سائٹ میں شائع ہونے والی تحقیق کے مطابق واشنگٹن یونیورسٹی کے محققین نے حال ہی میں یہ نتیجہ اخذ کیا ہے کہ چھٹی حس خاص طور پر دماغ کے اندورنی حصے میں موجود ہوتی ہے اور جب کسی شخص کو خطرہ محسوس ہوتا ہے تو یہ اسے متحرک کرنے کی ذمہ دار ہوتی ہے۔

چھٹی حس کے بارے میں اہم معلومات

چھٹی حس کے بارے میں ابھی تک کوئی تحقیق اپنے منطقی انجام کو نہیں پہنچ سکی ہے جس سے حتمی طور پر پتہ چل سکے کہ ایک شخص سے دوسرے میں چھٹی حس کتنی مختلف ہوتی ہے۔

یہی وجہ ہے کہ کچھ لوگ لاشعوری طور پر اسے ایک ایسا احساس سمجھتے ہیں جو ایک اضافی احساس کو تشکیل دیتا ہے، گویا یہ تیسری آنکھ ہے جو ظاہر سے کہیں زیادہ دیکھتی ہے اور آپ کو اس کا جواب دینا ہوتا ہے، کیونکہ یہ آپ کو خبردار کرتی ہے۔

تحقیق کے مطابق مضبوط چھٹی حس کے حامل افراد جذباتی اور نفسیاتی استحکام، اندرونی طور پر خوش اور خود اعتماد ہوتے ہیں، ایسے لوگ معاشرتی تعلقات کی وسعت اور کامیاب ہونے کی خصوصیت رکھتے ہیں۔

چھٹی حس میں بہتری لانے والی عادات

تحقیق کے مطابق چند عادات سے آپ چھٹی حس میں بہتری لا سکتے ہیں۔

کسی چیز کے بارے میں حقیقی و عقلی تجزیے کا سہارا لیے بغیر اندرونی جبلت کے شعور کو فروغ دیں۔

اپنے خوابوں کو یاد رکھیں، وہ لاشعور میں پوشیدہ آپ کے خیالات اور احساسات ہیں۔

کسی کاغذ کا خالی ٹکڑا لیں اور کوئی بھی سوچ جو آپ کے دماغ میں گھوم رہی ہے اسے بغیر کسی ہچکچاہٹ کے لکھ لیں، لکھنے سے آپ کا لاشعوری ذہن مضبوط ہوگا۔

اپنے اردگرد کے لوگوں اور بے جان اشیا کی چھوٹی چھوٹی تفصیلات پر توجہ دینا سیکھیں تاکہ آپ کو باریک چیزیں سمجھنے میں آسانی ہو۔

جب آپ کسی سے بات کر رہے ہوں تو توجہ دیں اس کی تبدیلیوں اور موڈ کو جانچنے کی کوشش کریں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں