The news is by your side.

Advertisement

دنیا بھر میں 259 صحافی مختلف ممالک میں قید ہیں، رپورٹ

واشنگٹن : عالمی تنظیم کی رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ دو ہزار سولہ میں عوام کو درست معلومات پہنچانے کے جرم میں دنیا بھر سے دو سو انسٹھ صحافیوں کو قید و بند کا سامنا ہے ، سب سے زیادہ صحافی ترکی میں قید ہیں۔

کمیٹی ٹو پروٹیکٹ جرنلسٹس کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ان صحافیوں کا جرم یہ تھا کہ وہ عام فرد تک درست معلومات فراہم کر رہے تھے،ترکی دنیا کا وہ ملک قرار پایا جہاں اکیاسی صحافی جیل میں موت و زندگی کے عذاب سے دوچار ہیں، اسی طرح دوسرے نمبر پر چین اور دیگر پانچ ممالک میں مصر، اریٹیریا اور ایتھوپیا ہیں۔

چین میں 38 جب کہ مصر میں 25 صحافی قید ہیں۔

صحافیوں کی عالمی تنظیم کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ یہ وہ صحافی ہیں جن کی آزادی اور حفاظت عالمی قوانین کے تحت حکومتوں پر لازم قرار دی گئی ہے۔

رپورٹ کے مطابق سنہ دو ہزار آٹھ کے بعد پہلی مرتبہ ایران صحافیوں کو قید کرنے میں عالمی طور سے پانچ اہم ممالک میں شامل نہ ہو سکا ہے۔

سن 2009ء کے انتخابات سے پہلے ایران میں جن صحافیوں کو قید کی سزائیں سنائی گئی تھیں، ان میں سے زیادہ تر اپنی سزائیں کاٹ چکے ہیں اور انہیں آزاد کیا جا چکا ہے۔

صحافیوں کے تحفظ کی عالمی تنظیم کا کہنا ہے کہ مذکورہ قید صحافیوں میں وہ صحافی شامل نہیں کئے گئے، جو کسی نہ کسی طرح اغوا یا دہشت گرد تنظیموں کے قبضے میں ہیں۔

خیال رہے کہ گزشتہ برس جیل بھیجے جانے والے صحافیوں کی تعداد 199 تھی۔ اس تنظیم نے 1990 سے صحافیوں سے متعلق اعدد و شمار جمع کرنے کا عمل شروع کیا تھا، جب سے لے کر آج تک رواں برس گرفتار ہونے والے صحافیوں کی تعداد سب سے زیادہ بنتی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں