The news is by your side.

Advertisement

بینظیرانکم سپورٹ پروگرام ، 27افسران نے بیگمات کے نام پر 30لاکھ روپے ہڑپ کرلئے

گھوٹکی: بینظیرانکم سپورٹ پروگرام کےتحت گھوٹکی کے 27 افسران نے بیگمات کے نام پر30 لاکھ روپے ہڑپ کرلئے، رقم لینے والوں میں تعلیم، صحت، ایگریکلچر، پاپوليشن کے افسران شامل ہیں۔

تفصیلات کے مطابق گھوٹکی میں 27 افسران کا بینظیرانکم سپورٹ پروگرام سے رقم لینے کا انکشاف سامنے آیا، گریڈ17 سے20 تک کے افسران نے بیگمات کے نام پر رقم وصول کی، رقم لینے والوں میں تعلیم، صحت، ایگریکلچر، پاپوليشن کے افسران شامل ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ بی آئی ایس پی سے رقم لینے والوں میں اکثر محکمہ تعلیم میں گریڈ 17کے ملازم اور گریڈ 17 سے 20 تک ہیڈ ماسٹر و افسران ہیں۔

یہ بھی انکشاف ہوا ہے کہ شکارپور کے محکمہ پاپولیشن کے افسر اور اوباڑو اسپتال کے سابق ایم ایس بھی رقم لینےوالوں میں شامل ہیں، بی آئی ایس پی سےسرکاری افسران نے 30لاکھ کی رقم وصول کی، وصولی کے لیےسرکاری ملازمین کو وفاقی ادارے کے نوٹس جاری کردیئے ہیں اور کہا ۔ملازمین نے رقم واپس نہیں کی تو ایکشن ہوگا۔

یاد رہےبے نظیر انکم سپورٹ پروگرام سےفائدہ اٹھانے والے غیرمستحق افراد سے متعلق تہلکہ خیز تفصیلات سامنے آئیں تھیں، جس میں بتایا گیا تھا فہرست سے نکالے جانے والوں میں اعلیٰ سرکاری افسران بھی شامل ہیں جبکہ صوبوں، وفاق کے افسران بھی بینظیرانکم سپورٹ پروگرام سے فائدہ اٹھاتے رہے ہیں۔

تفصیلات میں بتایا گیا تھا گریڈ17 سے 21 کے 2543 سرکاری افسران کو فہرست سے نکالا گیا، متعدد اعلیٰ سرکاری افسران بیویوں کے نام پر پیسے وصول کرتے رہے، بلوچستان میں سب سے زیادہ سرکاری افسران بی آئی ایس پی سے مستفید ہوئے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں