The news is by your side.

Advertisement

اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل شہباز تتلہ قتل کیس کا فیصلہ سنادیا گیا

لاہور کی مقامی عدالت نے اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل شہباز تتلہ قتل کیس کا فیصلہ سنادیا۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق ایڈیشنل سیشن جج شبیر راجہ کی جانب سے کیس پر محفوظ کیا گیا فیصلہ سنایا گیا، جس کے تحت مرکزی ملزم ایس ایس پی مفخرعدیل پر جرم ثابت ہونے ہر عمر قید کی سزا سنائی گئی۔

عدالت نے دو شریک ملزمان کو عدم ثبوت کی بنا پر بری کردیا، شریک ملزمان میں اسد سرور اور عرفان علی شامل تھے۔

وکیل مدعی فرہاد شاہ نے عدالت کو آگاہ کیا تھا کہ ملزمان نے بہیمانہ طریقے سے شہباز تتلہ کو قتل کیا اور قتل کے بعد ملزمان نے لاش تیزاب کے ذریعے تلف کی تھی، ملزمان کے خلاف فروری دو ہزار بیس میں مقدمہ درج کیا گیا تھا۔

یاد رہے کہ 10 فروری 2020 کو شہباز تتلہ قتل کیس کا مقدمہ درج کیا گیا تھا جبکہ 14 اکتوبر 2020 کو شہباز تتلہ قتل کیس کے ملزمان پر فرد جرم عائد کی گئی۔

سابق اسسٹنٹ اٹارنی جنرل شہبازتتلہ قتل کیس میں قید ایس ایس پی مفخر عدیل کو ملازمت سے برطرف کیا جاچکا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں