4 پاکستانی کوہ پیماؤں نےدنیا کی دوسری بلندترین چوٹی’کےٹو‘کوسرکرلیا -
The news is by your side.

Advertisement

4 پاکستانی کوہ پیماؤں نےدنیا کی دوسری بلندترین چوٹی’کےٹو‘کوسرکرلیا

گلگت: پاکستانی کوہ پیماؤں نے غیرملکی کوہ پیماؤں کی ٹیم کے ساتھ دنیا کی دوسری بڑی اور خطرناک چوٹی کے ٹو سرکرلی۔

تفصیلات کے مطابق پاکستانی اور غیرملکی کوہ پیماؤں کی 31 رکنی ٹیم نے دنیا کی دوسری بلند ترین چوٹی کے ٹو کو سرکرلیا۔

پاکستانی کوہ پیماؤں محمدعلی، علی محمد، فدا اورامتیازسدپارہ نے کے ٹو کی چوٹی پرسبزہلالی پرچم لہرایا۔

کوہ پیماؤں کی ٹیم میں 4 پاکستان سے ، چین سے 2، جاپان سے 2 ، نیپال سے 16، آئرلینڈ، منگولیا، میکسیکو، سوئٹزرلینڈ، امریکا، جمہوریہ چیک، بیلجیئم سے ایک ایک کوہ پیما شامل ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ کوہ پیماؤں کی ٹیم آج چوٹی سے واپس بیس کیمپ پہنچے گی۔

کینیڈین کوہ پیما ’کے ٹو‘ کی چوٹی سر کرنے کے دوران ہلاک

اس سے قبل رواں ماہ 8 جولائی کو کینیڈین کوہ پیما دنیا کی دوسری بلند ترین چوٹی ’کے ٹو‘ سر کرنے کے دوران اونچائی سے گر کر جان کی بازی ہار گئے تھے۔

پاک فوج نے ہنزہ میں الترچوٹی پرپھنسےغیرملکی کوہ پیماؤں کو بچالیا

یاد رہے کہ یکم جولائی کو پاک فوج کے پائلٹس نے الترچوٹی کو سرکرنے والے تین غیرملکی کوہ پیماؤں میں سے 2 کو بچا لیا جبکہ ایک کوہ پیما جان کی بازی ہار گیا تھا۔

واضح رہے کہ پہلی بار 1954 میں کے ٹو کو سر کیا گیا تھا، تاہم اب تک کے ٹو کو سر کرنے کی کوشش کرنے والے 80 کوہ پیما جان کی بازی ہار چکے ہیں۔ صرف 306 کوہ پیما ہی کے ٹو سر کرنے میں کامیاب ہوئے ہیں۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں