The news is by your side.

Advertisement

بلوچستان حکومت کی اہم کامیابی، 43 فراری قومی دھارے میں شامل

کوئٹہ: کالعدم تنظیم بلوچستان رپبلکن آرمی  کے چوا لیس فراریوں نے برہمداغ بگٹی سے لا تعلقی کا اعلان کر تے ہو ئے ہتھیار ڈا ل کر قومی دھارے میں شامل ہونے کا اعلان کردیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق کالعدم تنظیم بلوچ رپبلکن آرمی کے کمانڈر قیصر خان نے ن لیگ کے رکن قومی اسمبلی میردوستین خان ڈومکی، ایف سی کے بریگڈئیر امجد، کمانڈٹ ایف سی سبی ذوالفقار باجوہ سے ملاقات کے بعد اپنے 43 فراریوں سمیت ہتھیار ڈالنے کا اعلان کیا۔

ہتھیار ڈالنےکی تقریب کےدوران میڈیا سے بات کرتے ہوئے فراری کمانڈر قیصر خان کا کہنا تھا کہ برہمداغ بگٹی نے بھارت کے سامنے اپنا سرجھکایا اب ہمارا اس سے کوئی تعلق نہیں رہا۔

بی آر اے کے کمانڈر کا کہنا تھا کہ براہمداغ بگٹی کی جانب سے بھارتی حمایت کے فیصلے کو نظر انداز کرتے ہیں اور دشمن کو واضح طور پر یہ پیغام دینا چاہتے ہیں کہ پاکستان میں کسی کی بھی مداخلت برداشت نہیں کریں گے۔

مسلم لیگ ن کے رکن قومی اسمبلی میردوستین  خان ڈومکی نے فراریوں کو قومی دھارے میں شامل ہونے پر مبارک باد پیش کرتے ہوئے کہا کہ ’’بھارت کی بلوچستان میں مداخلت پاکستان کو کمزور کرنے کی سازش ہے مگر اب ناراض بلوچوں کو اپنی غلطی کا احساس ہورہا ہے اور وہ قومی دھارے میں شامل بھی ہورہے ہیں‘‘۔

انہوں نے تقریب کے دوران نعرہ ’’بھارت کا جو یار ہے‘‘ کا نعرہ لگایا جس پر پنڈال میں موجود فراریوں اور دیگر شرکاء نے با آواز بلند جواب دیتے ہوئے کہا کہ ’’غدار ہے غدار ہے‘‘۔ علاوہ ازیں فراریوں کی جانب سے پاکستان زندہ باد کے فلک شگاف نعرے لگائے گئے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں