The news is by your side.

Advertisement

روسی فوج کی شام کے صوبے ادلب میں فضائی بمباری، 44 افراد جاں بحق

دمشق: شام کے صوبے ادلب میں افطاری کے وقت روسی طیاروں نے قیامت ڈھادی، فضائی بمباری کے نتیجے میں 44 افراد جاں بحق ہوگئے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق روسی لڑاکا طیاروں نے شام کے صوبے ادلب میں باغیوں کے ٹھکانوں پر بمباری کی، جس میں 44 افراد جاں بحق ہوگئے، رواں سال کسی ایک حملے میں اموات کی یہ سب سے بڑی تعداد ہے۔

انسانی حقوق گروپ کے مطابق ابتدائی اطلاعات میں 18 عام شہریوں کے مارے جانے کی تصدیق کی گئی ہے، تاہم مزید ڈیڑھ درجن افراد کی میتیں نکال لی گئی ہیں، مرنے والوں میں خواتین و بچے بھی شامل ہیں جبکہ زخمیوں کی تعداد 60 بتائی جارہی ہے۔

انسانی حقوق کے آبزرور رامی عبدالرحمان نے بتایا ہے کہ ممکنہ طور پر ادلب میں بمباری روسی جنگی طیاروں کی جانب سے کی گئی ہے، اس میں روسی ساختہ بم استعمال ہوئے ہیں۔

متاثرہ علاقے میں امدادی کارروائیاں جاری ہیں، ان کے پاس دو ایسے زخمیوں کو بھی لایا گیا ہے جن میں سے ایک بے ہوش تھا اور دوسرے کے چہرے کی شناخت نہیں ہو پارہی تھی۔

دوسری جانب روسی وزارت دفاع نے ان حملوں کی سختی سے تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ فضائی حملے سے ماسکو کا کوئی تعلق نہیں ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں