The news is by your side.

Advertisement

فیصل آباد مدرسے کے پانچ طلبہ وادیٔ نیلم حادثے میں لا پتا

مظفر آباد: آزاد کشمیر کے علاقے وادیٔ نیلم میں شدید بارشوں اور سیلابی ریلے کی وجہ سے پیش آنے والے حادثے میں فیصل آباد مدرسے کے پانچ طلبہ بھی لا پتا ہو گئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق وادی نیلم حادثے میں فیصل آباد کے ایک مدرسے میں زیر تعلیم 5 طلبہ بھی لا پتا ہو گئے ہیں، پانچوں طالب عالم چھٹیوں کے دوران تبلیغی جماعت کے ساتھ گئے تھے۔

متاثرہ علاقے میں فوجی دستے کا ریسکیو آپریشن جاری ہے، پاک فوج کے شعبۂ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کا کہنا ہے کہ لا پتا افراد کی تلاش کا کام جاری ہے۔

انتظامیہ کا کہنا ہے کہ لا پتا طلبہ میں ہارون، سلیمان، عفان، عمران عزیز اور عمر ناصر شامل ہیں، پانچوں طلبہ کا سراغ نہیں مل سکا ہے، جاں بحق ہونے کا خدشہ ہے۔

خیال رہے کہ نیلم وادی میں لینڈ سلائیڈنگ کے واقعے میں 24 افراد کے جاں بحق ہونے کا خدشہ ظاہر کیا گیا ہے، دوسری طرف علاقے میں جاری ریسکیو آپریشن میں 52 افراد کو بہ ذریعہ ہیلی کاپٹر محفوظ مقام پر منتقل کیا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  وادی نیلم میں لینڈ سلائیڈنگ، فوجی دستے کا ریسکیو آپریشن: آئی ایس پی آر

علاقے میں کلاؤڈ برسٹ کے بعد شدید بارشوں، بجلی کڑکنے اور سیلابی ریلے نے وسیع پیمانے پر تباہی مچائی ہے۔

بتایا جا رہا ہے کہ چوبیس افراد کے بارے میں خدشہ ہے کہ وہ سیلابی ریلے میں بہہ کر جاں بحق ہو چکے ہیں، سیلابی ریلے کی زد میں آ کر ڈیڑھ سو گھر اور ایک مسجد بھی بہہ چکے ہیں۔

سیلابی ریلے میں بہنے والوں میں سے گیارہ افراد کا تعلق تبلیغی جماعت سے بتایا جا رہا ہے، جب کہ باقی مقامی لوگ ہیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ ریسیکو آپریشن جاری ہے تاہم انھوں نے اموات میں اضافے کا خدشہ بھی ظاہر کیا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں